22 C
Lahore
Sunday, October 17, 2021

افریقہ کا ملک دنیا سے 7 سال اور 8 مہینے پیچھے رہ گیا، اس ملک میں 13 مہینے ہوتے ہیں

افریقہ ایک ایسا ملک ہے، جہاں بہت سے پُرانے رسم و رواج ابھی تک قائم ہیں۔ لوگ ان کے مطابق ہی اپنی زندگی گزارتے ہیں۔ آج کے دور میں دنیا بہت تیزی سے ترقی کر رہی ہے۔ مگر افریقہ کے کچھ شہر ایسے بھی ہیں، جہاں لوگ زندگی ایسے گزارتے ہیں۔ جیسے کہ وہ بابا آدم کے دور میں ہیں۔ ان کے لیے ان کے رسم و رواج اور ان کی تہذیب و ثقافت بہت زیادہ خاص ہے۔ جن کو ختم کرنے کا وہ کبھی بھی سوچ نہیں سکتے۔

:تیرہ مہینوں کا ایک سال

افریقہ کا ایک ملک جس کا نام ایتھوپیا ہے، اس میں سال 13 مہینوں کے بعد ختم ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے یہ ملک دنیا کے کیلنڈر سے 7 سال اور 8 مہینے پیچھے رہ گیا ہے۔

مشہور مشن کیتھولک نے 5 ویں صدی میں حضرت عیسیٰ علیہ اسلام کی پیدائش کی تاریخ میں کچھ ردو بدل کیا تھا۔ لیکن ایتھوپین آرتھوڈکس نے اس ردو بدل کو تسلیم کرنے سے صاف انکار کر دیا تھا۔ اسی وجہ سے وہ دنیا کے کیلنڈر سے بہت پیچھے رہ گئے ہیں۔

وہ اپنے عیسوی کیلنڈر کے مطابق نئے سال کا آغاز 11 ستمبر کو کرتے ہیں۔ لیپ ائیر کا آغاز 12 ستمبر کو کرتے ہیں۔ افریقہ کے اس ملک میں سال کے 12 مہینے تو 30 دنوں کے مطابق ہی چلتے ہیں۔ لیکن سال کے آخری مہینے میں صرف 5 سے 6 دن ہوتے ہیں۔

دنیا کے لیپ ائیر میں صرف ایک دن کا ہی اضافہ ہوتا ہے۔ مگر ایتھوپیا کے لیپ ائیر میں 5 سے 6 دنوں کا مہینہ زیادہ ہو جاتا ہے۔ دنوں کے اس اعداد و شمار کی وجہ سے ایتھوپیا آج کے دن کے مطابق ہماری دنیا کے کیلنڈر سے 7 سال 8 ماہ پیچھے ہے۔

ایتھوپیا کے کیلنڈر تو دنیا سے مختلف ہیں ہی، اس کے ساتھ ساتھ ان کی گھڑیاں بھی ہماری دنیا سے بہت مختلف ہیں۔ عام طور پر دن کا آغاز 12 بجے سے ہوتا ہے۔ مگر ایتھوپیا میں دن کا آغاز 6 بجے ہوتا ہے۔ اسی لیے ان کی رات اور دوپہر عام دنیا سے بہت مختلف ہوتی ہے۔

یہ تو صرف افریقہ کے ایک ملک کا ذکر ہے۔ مگر افریقہ میں ایسے بہت سے ممالک پائے جاتے ہیں۔ جنہوں نے دنیا کے ساتھ ترقی نہیں کی اور اب وہ آج کی دنیا سے بہت پیچھے ہیں۔

افریقہ ایک ایسا ملک ہے، جہاں بہت سے پُرانے رسم و رواج ابھی تک قائم ہیں۔ لوگ ان کے مطابق ہی اپنی زندگی گزارتے ہیں۔ آج کے دور میں دنیا بہت تیزی سے ترقی کر رہی ہے۔ مگر افریقہ کے کچھ شہر ایسے بھی ہیں، جہاں لوگ زندگی ایسے گزارتے ہیں۔ جیسے کہ وہ بابا آدم کے دور میں ہیں۔ ان کے لیے ان کے رسم و رواج اور ان کی تہذیب و ثقافت بہت زیادہ خاص ہے۔ جن کو ختم کرنے کا وہ کبھی بھی سوچ نہیں سکتے۔

:تیرہ مہینوں کا ایک سال

افریقہ کا ایک ملک جس کا نام ایتھوپیا ہے، اس میں سال 13 مہینوں کے بعد ختم ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے یہ ملک دنیا کے کیلنڈر سے 7 سال اور 8 مہینے پیچھے رہ گیا ہے۔

مشہور مشن کیتھولک نے 5 ویں صدی میں حضرت عیسیٰ علیہ اسلام کی پیدائش کی تاریخ میں کچھ ردو بدل کیا تھا۔ لیکن ایتھوپین آرتھوڈکس نے اس ردو بدل کو تسلیم کرنے سے صاف انکار کر دیا تھا۔ اسی وجہ سے وہ دنیا کے کیلنڈر سے بہت پیچھے رہ گئے ہیں۔

وہ اپنے عیسوی کیلنڈر کے مطابق نئے سال کا آغاز 11 ستمبر کو کرتے ہیں۔ لیپ ائیر کا آغاز 12 ستمبر کو کرتے ہیں۔ افریقہ کے اس ملک میں سال کے 12 مہینے تو 30 دنوں کے مطابق ہی چلتے ہیں۔ لیکن سال کے آخری مہینے میں صرف 5 سے 6 دن ہوتے ہیں۔

دنیا کے لیپ ائیر میں صرف ایک دن کا ہی اضافہ ہوتا ہے۔ مگر ایتھوپیا کے لیپ ائیر میں 5 سے 6 دنوں کا مہینہ زیادہ ہو جاتا ہے۔ دنوں کے اس اعداد و شمار کی وجہ سے ایتھوپیا آج کے دن کے مطابق ہماری دنیا کے کیلنڈر سے 7 سال 8 ماہ پیچھے ہے۔

ایتھوپیا کے کیلنڈر تو دنیا سے مختلف ہیں ہی، اس کے ساتھ ساتھ ان کی گھڑیاں بھی ہماری دنیا سے بہت مختلف ہیں۔ عام طور پر دن کا آغاز 12 بجے سے ہوتا ہے۔ مگر ایتھوپیا میں دن کا آغاز 6 بجے ہوتا ہے۔ اسی لیے ان کی رات اور دوپہر عام دنیا سے بہت مختلف ہوتی ہے۔

یہ تو صرف افریقہ کے ایک ملک کا ذکر ہے۔ مگر افریقہ میں ایسے بہت سے ممالک پائے جاتے ہیں۔ جنہوں نے دنیا کے ساتھ ترقی نہیں کی اور اب وہ آج کی دنیا سے بہت پیچھے ہیں۔

افریقہ ایک ایسا ملک ہے، جہاں بہت سے پُرانے رسم و رواج ابھی تک قائم ہیں۔ لوگ ان کے مطابق ہی اپنی زندگی گزارتے ہیں۔ آج کے دور میں دنیا بہت تیزی سے ترقی کر رہی ہے۔ مگر افریقہ کے کچھ شہر ایسے بھی ہیں، جہاں لوگ زندگی ایسے گزارتے ہیں۔ جیسے کہ وہ بابا آدم کے دور میں ہیں۔ ان کے لیے ان کے رسم و رواج اور ان کی تہذیب و ثقافت بہت زیادہ خاص ہے۔ جن کو ختم کرنے کا وہ کبھی بھی سوچ نہیں سکتے۔

:تیرہ مہینوں کا ایک سال

افریقہ کا ایک ملک جس کا نام ایتھوپیا ہے، اس میں سال 13 مہینوں کے بعد ختم ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے یہ ملک دنیا کے کیلنڈر سے 7 سال اور 8 مہینے پیچھے رہ گیا ہے۔

مشہور مشن کیتھولک نے 5 ویں صدی میں حضرت عیسیٰ علیہ اسلام کی پیدائش کی تاریخ میں کچھ ردو بدل کیا تھا۔ لیکن ایتھوپین آرتھوڈکس نے اس ردو بدل کو تسلیم کرنے سے صاف انکار کر دیا تھا۔ اسی وجہ سے وہ دنیا کے کیلنڈر سے بہت پیچھے رہ گئے ہیں۔

وہ اپنے عیسوی کیلنڈر کے مطابق نئے سال کا آغاز 11 ستمبر کو کرتے ہیں۔ لیپ ائیر کا آغاز 12 ستمبر کو کرتے ہیں۔ افریقہ کے اس ملک میں سال کے 12 مہینے تو 30 دنوں کے مطابق ہی چلتے ہیں۔ لیکن سال کے آخری مہینے میں صرف 5 سے 6 دن ہوتے ہیں۔

دنیا کے لیپ ائیر میں صرف ایک دن کا ہی اضافہ ہوتا ہے۔ مگر ایتھوپیا کے لیپ ائیر میں 5 سے 6 دنوں کا مہینہ زیادہ ہو جاتا ہے۔ دنوں کے اس اعداد و شمار کی وجہ سے ایتھوپیا آج کے دن کے مطابق ہماری دنیا کے کیلنڈر سے 7 سال 8 ماہ پیچھے ہے۔

ایتھوپیا کے کیلنڈر تو دنیا سے مختلف ہیں ہی، اس کے ساتھ ساتھ ان کی گھڑیاں بھی ہماری دنیا سے بہت مختلف ہیں۔ عام طور پر دن کا آغاز 12 بجے سے ہوتا ہے۔ مگر ایتھوپیا میں دن کا آغاز 6 بجے ہوتا ہے۔ اسی لیے ان کی رات اور دوپہر عام دنیا سے بہت مختلف ہوتی ہے۔

یہ تو صرف افریقہ کے ایک ملک کا ذکر ہے۔ مگر افریقہ میں ایسے بہت سے ممالک پائے جاتے ہیں۔ جنہوں نے دنیا کے ساتھ ترقی نہیں کی اور اب وہ آج کی دنیا سے بہت پیچھے ہیں۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,982FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles