26 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

ائیرپورٹ سیکیورٹی کے 6 ایسے طریقے جن سے آپ انجان ہیں

آپ میں سے زیادہ تر لوگوں نے دیکھا ہے، کہ بسوں کے اسٹینڈ اور ریلوے سٹیشن پر سیکیورٹی کا نظام موجود ہوتا ہے۔ کافی لوگ ان کے اصولوں سے واقف ہیں۔ لیکن آپ میں سے کچھ لوگ ائیرپورٹ کی سیکیورٹی سے واقف نہیں ہیں۔

آج ہم آپ کو ائیرپورٹ کی سیکیورٹی کے بارے میں چند ایسے راز بتائیں گے، جو کہ عام لوگ نہیں جانتے۔

:بغیر کپڑوں کے چیکنگ

ائیر پورٹ میں چیکنگ کے لیے میٹل ڈیٹیکٹر اور واک تھرو گیٹس استعمال ہوتے ہیں۔ لیکن ایک طریقہ ایسا بھی ہے جو کہ آپ کے علم میں نہیں ہے۔ ایئرپورٹ میں آپ کی چیکنگ کے لیے ایک اسکینر ایسا ہوتا ہے۔ جو کہ دیکھنے میں عام لگتا ہے۔ لیکن اس کی مدد سے آپ کو کپڑوں کے بغیر چیک کیا جاتا ہے۔

جب آپ اسکینر مشین کے آگے ہوتے ہیں، تو آپ کو ہاتھ اوپر کرنے کو کہا جاتا ہے۔ جب آپ ہاتھ اٹھا کر اسکینر کے آگے سے گزرتے ہیں، تو سیکیورٹی چیکر آپ کو بنا لباس کے چیک کر لیتا ہے۔ یہ اس لیے کہ آپ نے اپنے کپڑوں کے اندر کوئی چیز تو نہیں چھپائی۔

:آپ کا لہجہ

ائیرپورٹ سیکیورٹی میں ایک عملہ ایسا بھی ہوتا ہے جو کہ آپ کے رویے پر نظر رکھتا ہے۔ اس عملے کو پروفائلز کہا جاتا ہے۔ یہ عملہ لوگوں کی نقل و حرکت، بات چیت کا لہجہ، اور مشکوک افراد پر نظر رکھتا ہے۔ اگر کوئی بھی شخص اصولوں کی خلاف ورزی کرتا نظر آئے، تو یہ عملہ اسی وقت اسے تفتیش کے لیے روک لیتا ہے۔ پروفائلز کا عملہ عام طور پر پاسپورٹ کنٹرول ڈبسک اور ائیرپورٹ کی انتظار گاہ میں بیٹھے مسافروں پر نظر رکھتا ہے۔

:آپ کو اپنے سامان کی خبر نہیں ہو گی

مسافروں کا سامان پر ایک کوڈ ٹیگ لگیا جاتا ہے۔ اس کی مدد سے سامان مسافروں کے پاس با آسانی پہنچ جاتا ہے۔ اکثر ایسا بھی ہوتا ہے، کہ مسافر کا سامان کسی اور کے پاس چلا جاتا ہے۔

یہ معاملہ اس وقت پیش آتا ہے، جب کوئی مسافر پہلے بھی سفر کر چکا ہو۔ اس نے پہلا کوڈ ٹیگ ہٹایا نہیں ہوتا، اسی وجہ سے کمپیوٹر نیا ٹیگ نہیں لگا پاتا اور سامان کسی اور فلائٹ میں پہنچ جاتا ہے۔

:کتوں کے ذریعے تفتیش

جب آپ اپنے سامان کی چیکنگ کرواتے ہیں۔ تو ایک مرحلہ ایسا بھی ہوتا ہے جس میں آپ بہت عجیب سا محسوس کرتے ہیں، اورکچھ تو اس مراحل سے ڈرتے بھی ہیں۔ دراصل یہ چیکنگ کتے کرتے ہیں۔ کہ کہیں آپ کے سامان میں کوئی مشکوک چیز تو نہیں جو خطرے کا سبب بن سکتی ہے۔

:جہاز میں 24 گھنٹے کھانا

مشہور ائیرپورٹس پر 24 گھنٹے کھانا پکتا ہے۔ اس کھانے کو آپ بھی کھا سکتے ہیں۔ لیکن اس کی ایک خاص شرط ہے کہ، اس کی بنکنگ 6 سے 10 گھنٹے پہلے کروانی ہوتی ہے۔

:آپ کے ہاتھوں کی چیکنگ

ان تمام مراحل کے بعد ایک مرحلہ ایسا بھی ہوتا ہے کہ آپ کے ہاتھ چیک کیے جاتے ہیں۔ کہ آپ کے ہاتھوں میں کوئی غیر قانونی چیز تو نہیں ہے۔

یہ چیکنگ آٹو مائنرز کی مدد سے ہوتی ہے۔ سیکیورٹی اہلکار آپ کا ہاتھ ایک خاص کپڑے پر اسکین کرتے ہیں کہ کہیں آپ نے کوئی نشہ آور چیز تو نہیں چھپا رکھی۔

آپ میں سے زیادہ تر لوگوں نے دیکھا ہے، کہ بسوں کے اسٹینڈ اور ریلوے سٹیشن پر سیکیورٹی کا نظام موجود ہوتا ہے۔ کافی لوگ ان کے اصولوں سے واقف ہیں۔ لیکن آپ میں سے کچھ لوگ ائیرپورٹ کی سیکیورٹی سے واقف نہیں ہیں۔

آج ہم آپ کو ائیرپورٹ کی سیکیورٹی کے بارے میں چند ایسے راز بتائیں گے، جو کہ عام لوگ نہیں جانتے۔

:بغیر کپڑوں کے چیکنگ

ائیر پورٹ میں چیکنگ کے لیے میٹل ڈیٹیکٹر اور واک تھرو گیٹس استعمال ہوتے ہیں۔ لیکن ایک طریقہ ایسا بھی ہے جو کہ آپ کے علم میں نہیں ہے۔ ایئرپورٹ میں آپ کی چیکنگ کے لیے ایک اسکینر ایسا ہوتا ہے۔ جو کہ دیکھنے میں عام لگتا ہے۔ لیکن اس کی مدد سے آپ کو کپڑوں کے بغیر چیک کیا جاتا ہے۔

جب آپ اسکینر مشین کے آگے ہوتے ہیں، تو آپ کو ہاتھ اوپر کرنے کو کہا جاتا ہے۔ جب آپ ہاتھ اٹھا کر اسکینر کے آگے سے گزرتے ہیں، تو سیکیورٹی چیکر آپ کو بنا لباس کے چیک کر لیتا ہے۔ یہ اس لیے کہ آپ نے اپنے کپڑوں کے اندر کوئی چیز تو نہیں چھپائی۔

:آپ کا لہجہ

ائیرپورٹ سیکیورٹی میں ایک عملہ ایسا بھی ہوتا ہے جو کہ آپ کے رویے پر نظر رکھتا ہے۔ اس عملے کو پروفائلز کہا جاتا ہے۔ یہ عملہ لوگوں کی نقل و حرکت، بات چیت کا لہجہ، اور مشکوک افراد پر نظر رکھتا ہے۔ اگر کوئی بھی شخص اصولوں کی خلاف ورزی کرتا نظر آئے، تو یہ عملہ اسی وقت اسے تفتیش کے لیے روک لیتا ہے۔ پروفائلز کا عملہ عام طور پر پاسپورٹ کنٹرول ڈبسک اور ائیرپورٹ کی انتظار گاہ میں بیٹھے مسافروں پر نظر رکھتا ہے۔

:آپ کو اپنے سامان کی خبر نہیں ہو گی

مسافروں کا سامان پر ایک کوڈ ٹیگ لگیا جاتا ہے۔ اس کی مدد سے سامان مسافروں کے پاس با آسانی پہنچ جاتا ہے۔ اکثر ایسا بھی ہوتا ہے، کہ مسافر کا سامان کسی اور کے پاس چلا جاتا ہے۔

یہ معاملہ اس وقت پیش آتا ہے، جب کوئی مسافر پہلے بھی سفر کر چکا ہو۔ اس نے پہلا کوڈ ٹیگ ہٹایا نہیں ہوتا، اسی وجہ سے کمپیوٹر نیا ٹیگ نہیں لگا پاتا اور سامان کسی اور فلائٹ میں پہنچ جاتا ہے۔

:کتوں کے ذریعے تفتیش

جب آپ اپنے سامان کی چیکنگ کرواتے ہیں۔ تو ایک مرحلہ ایسا بھی ہوتا ہے جس میں آپ بہت عجیب سا محسوس کرتے ہیں، اورکچھ تو اس مراحل سے ڈرتے بھی ہیں۔ دراصل یہ چیکنگ کتے کرتے ہیں۔ کہ کہیں آپ کے سامان میں کوئی مشکوک چیز تو نہیں جو خطرے کا سبب بن سکتی ہے۔

:جہاز میں 24 گھنٹے کھانا

مشہور ائیرپورٹس پر 24 گھنٹے کھانا پکتا ہے۔ اس کھانے کو آپ بھی کھا سکتے ہیں۔ لیکن اس کی ایک خاص شرط ہے کہ، اس کی بنکنگ 6 سے 10 گھنٹے پہلے کروانی ہوتی ہے۔

:آپ کے ہاتھوں کی چیکنگ

ان تمام مراحل کے بعد ایک مرحلہ ایسا بھی ہوتا ہے کہ آپ کے ہاتھ چیک کیے جاتے ہیں۔ کہ آپ کے ہاتھوں میں کوئی غیر قانونی چیز تو نہیں ہے۔

یہ چیکنگ آٹو مائنرز کی مدد سے ہوتی ہے۔ سیکیورٹی اہلکار آپ کا ہاتھ ایک خاص کپڑے پر اسکین کرتے ہیں کہ کہیں آپ نے کوئی نشہ آور چیز تو نہیں چھپا رکھی۔

آپ میں سے زیادہ تر لوگوں نے دیکھا ہے، کہ بسوں کے اسٹینڈ اور ریلوے سٹیشن پر سیکیورٹی کا نظام موجود ہوتا ہے۔ کافی لوگ ان کے اصولوں سے واقف ہیں۔ لیکن آپ میں سے کچھ لوگ ائیرپورٹ کی سیکیورٹی سے واقف نہیں ہیں۔

آج ہم آپ کو ائیرپورٹ کی سیکیورٹی کے بارے میں چند ایسے راز بتائیں گے، جو کہ عام لوگ نہیں جانتے۔

:بغیر کپڑوں کے چیکنگ

ائیر پورٹ میں چیکنگ کے لیے میٹل ڈیٹیکٹر اور واک تھرو گیٹس استعمال ہوتے ہیں۔ لیکن ایک طریقہ ایسا بھی ہے جو کہ آپ کے علم میں نہیں ہے۔ ایئرپورٹ میں آپ کی چیکنگ کے لیے ایک اسکینر ایسا ہوتا ہے۔ جو کہ دیکھنے میں عام لگتا ہے۔ لیکن اس کی مدد سے آپ کو کپڑوں کے بغیر چیک کیا جاتا ہے۔

جب آپ اسکینر مشین کے آگے ہوتے ہیں، تو آپ کو ہاتھ اوپر کرنے کو کہا جاتا ہے۔ جب آپ ہاتھ اٹھا کر اسکینر کے آگے سے گزرتے ہیں، تو سیکیورٹی چیکر آپ کو بنا لباس کے چیک کر لیتا ہے۔ یہ اس لیے کہ آپ نے اپنے کپڑوں کے اندر کوئی چیز تو نہیں چھپائی۔

:آپ کا لہجہ

ائیرپورٹ سیکیورٹی میں ایک عملہ ایسا بھی ہوتا ہے جو کہ آپ کے رویے پر نظر رکھتا ہے۔ اس عملے کو پروفائلز کہا جاتا ہے۔ یہ عملہ لوگوں کی نقل و حرکت، بات چیت کا لہجہ، اور مشکوک افراد پر نظر رکھتا ہے۔ اگر کوئی بھی شخص اصولوں کی خلاف ورزی کرتا نظر آئے، تو یہ عملہ اسی وقت اسے تفتیش کے لیے روک لیتا ہے۔ پروفائلز کا عملہ عام طور پر پاسپورٹ کنٹرول ڈبسک اور ائیرپورٹ کی انتظار گاہ میں بیٹھے مسافروں پر نظر رکھتا ہے۔

:آپ کو اپنے سامان کی خبر نہیں ہو گی

مسافروں کا سامان پر ایک کوڈ ٹیگ لگیا جاتا ہے۔ اس کی مدد سے سامان مسافروں کے پاس با آسانی پہنچ جاتا ہے۔ اکثر ایسا بھی ہوتا ہے، کہ مسافر کا سامان کسی اور کے پاس چلا جاتا ہے۔

یہ معاملہ اس وقت پیش آتا ہے، جب کوئی مسافر پہلے بھی سفر کر چکا ہو۔ اس نے پہلا کوڈ ٹیگ ہٹایا نہیں ہوتا، اسی وجہ سے کمپیوٹر نیا ٹیگ نہیں لگا پاتا اور سامان کسی اور فلائٹ میں پہنچ جاتا ہے۔

:کتوں کے ذریعے تفتیش

جب آپ اپنے سامان کی چیکنگ کرواتے ہیں۔ تو ایک مرحلہ ایسا بھی ہوتا ہے جس میں آپ بہت عجیب سا محسوس کرتے ہیں، اورکچھ تو اس مراحل سے ڈرتے بھی ہیں۔ دراصل یہ چیکنگ کتے کرتے ہیں۔ کہ کہیں آپ کے سامان میں کوئی مشکوک چیز تو نہیں جو خطرے کا سبب بن سکتی ہے۔

:جہاز میں 24 گھنٹے کھانا

مشہور ائیرپورٹس پر 24 گھنٹے کھانا پکتا ہے۔ اس کھانے کو آپ بھی کھا سکتے ہیں۔ لیکن اس کی ایک خاص شرط ہے کہ، اس کی بنکنگ 6 سے 10 گھنٹے پہلے کروانی ہوتی ہے۔

:آپ کے ہاتھوں کی چیکنگ

ان تمام مراحل کے بعد ایک مرحلہ ایسا بھی ہوتا ہے کہ آپ کے ہاتھ چیک کیے جاتے ہیں۔ کہ آپ کے ہاتھوں میں کوئی غیر قانونی چیز تو نہیں ہے۔

یہ چیکنگ آٹو مائنرز کی مدد سے ہوتی ہے۔ سیکیورٹی اہلکار آپ کا ہاتھ ایک خاص کپڑے پر اسکین کرتے ہیں کہ کہیں آپ نے کوئی نشہ آور چیز تو نہیں چھپا رکھی۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles