30 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

میں ایک عیسائی ہوں۔۔۔ مگر آج تک میں نے چھوٹے ڈریسز نہیں پہنے، اداکارہ سُنیتا مارشل کا بیان

دنیا کے آغاز سے ہی جو لوگ جس معاشرے میں رہتے ہیں۔ وہ اپنے آپ کو اسی معاشرے میں ڈھال لیتے ہیں۔ بے شک آپ یورپ میں ہوں یا پھر ایشیا میں، مگر تبدیلی ہر انسان میں آتی ہے۔ اسی طرح ہماری پاکستانی شوبز کی مشہور اداکارہ سُنیتا مارشل ہیں۔ جو کہ عیسائی مذہب سے تعلق رکھتی ہیں۔ مگر ان کی شادی حسن خان سے ہوئی ہے۔ جو کہ مسلمان ہیں۔ حال ہی میں ان کے بچوں کی آمین بھی ہوئی ہے۔ جس پر ان کے مداحوں نے ان کو خوب داد دی ہے۔

مشہور اداکارہ سُنیتا مارشل نے حال ہی میں ایک انٹرویو میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس ٹیکنالوجی کے دور میں ہم سوشل میڈیا ایپ انسٹا گرام پر اپنے فالورز ایک دوسرے سے زیادہ کرنے کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں۔ ہم ہر وقت اسی سوچ میں ڈوبے رہتے ہیں کہ ہم کیسے اپنے فالورز کو ایک دوسرے سے زیادہ کریں۔ اسی وجہ سے ہم بہت سے غلط کاموں میں پڑ جاتے ہیں۔ اب جونسی ماڈلیں شوبز انڈسٹری میں آ رہی ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ وہ چھوٹے کپڑے پہن کر بہت مشہور ہو جائیں گی، اور انہیں کام زیادہ سے زیادہ ملے گا۔

میں خود ایک کرسچن ہوں۔ ہم سب ایک اسلامی ملک میں رہتے ہیں۔ مگر آج تک میں نے کبھی بھی چھوٹے ڈریسز اور بیہودہ فیشن میں خود کو نہیں ڈھالہ۔ میں نے جب اپنے کام کو آغاز کیا تھا، اس وقت بھی اتنے کپڑے پہنتی تھی۔ جس سے میں لوگوں کے سامنے بغیر کسی شرم کے کھڑی رہ سکوں۔ اور لوگ مجھے گندی نظر سے نہ دیکھیں۔

:مذید دیکھیں اس ویڈیو میں

مجھے جب بھی کسی ماڈلنگ شو میں چھوٹے کپڑے پہننے کے لیے کہا گیا، تو میں یا تو اس کے خلاف اپنی آواز بلند کرتی تھی۔ یا پھر میں اس شو کو ٹھکرا دیتی تھی۔ میں یہ چاہتی ہوں کے آنے والی ماڈلز بھی اس غلط فہمی کو اپنے ذہنوں سے نکال دیں، اور مناسب لباس پہن کر اپنے ماں باپ کا نام روشن کریں۔

دنیا کے آغاز سے ہی جو لوگ جس معاشرے میں رہتے ہیں۔ وہ اپنے آپ کو اسی معاشرے میں ڈھال لیتے ہیں۔ بے شک آپ یورپ میں ہوں یا پھر ایشیا میں، مگر تبدیلی ہر انسان میں آتی ہے۔ اسی طرح ہماری پاکستانی شوبز کی مشہور اداکارہ سُنیتا مارشل ہیں۔ جو کہ عیسائی مذہب سے تعلق رکھتی ہیں۔ مگر ان کی شادی حسن خان سے ہوئی ہے۔ جو کہ مسلمان ہیں۔ حال ہی میں ان کے بچوں کی آمین بھی ہوئی ہے۔ جس پر ان کے مداحوں نے ان کو خوب داد دی ہے۔

مشہور اداکارہ سُنیتا مارشل نے حال ہی میں ایک انٹرویو میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس ٹیکنالوجی کے دور میں ہم سوشل میڈیا ایپ انسٹا گرام پر اپنے فالورز ایک دوسرے سے زیادہ کرنے کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں۔ ہم ہر وقت اسی سوچ میں ڈوبے رہتے ہیں کہ ہم کیسے اپنے فالورز کو ایک دوسرے سے زیادہ کریں۔ اسی وجہ سے ہم بہت سے غلط کاموں میں پڑ جاتے ہیں۔ اب جونسی ماڈلیں شوبز انڈسٹری میں آ رہی ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ وہ چھوٹے کپڑے پہن کر بہت مشہور ہو جائیں گی، اور انہیں کام زیادہ سے زیادہ ملے گا۔

میں خود ایک کرسچن ہوں۔ ہم سب ایک اسلامی ملک میں رہتے ہیں۔ مگر آج تک میں نے کبھی بھی چھوٹے ڈریسز اور بیہودہ فیشن میں خود کو نہیں ڈھالہ۔ میں نے جب اپنے کام کو آغاز کیا تھا، اس وقت بھی اتنے کپڑے پہنتی تھی۔ جس سے میں لوگوں کے سامنے بغیر کسی شرم کے کھڑی رہ سکوں۔ اور لوگ مجھے گندی نظر سے نہ دیکھیں۔

:مذید دیکھیں اس ویڈیو میں

مجھے جب بھی کسی ماڈلنگ شو میں چھوٹے کپڑے پہننے کے لیے کہا گیا، تو میں یا تو اس کے خلاف اپنی آواز بلند کرتی تھی۔ یا پھر میں اس شو کو ٹھکرا دیتی تھی۔ میں یہ چاہتی ہوں کے آنے والی ماڈلز بھی اس غلط فہمی کو اپنے ذہنوں سے نکال دیں، اور مناسب لباس پہن کر اپنے ماں باپ کا نام روشن کریں۔

دنیا کے آغاز سے ہی جو لوگ جس معاشرے میں رہتے ہیں۔ وہ اپنے آپ کو اسی معاشرے میں ڈھال لیتے ہیں۔ بے شک آپ یورپ میں ہوں یا پھر ایشیا میں، مگر تبدیلی ہر انسان میں آتی ہے۔ اسی طرح ہماری پاکستانی شوبز کی مشہور اداکارہ سُنیتا مارشل ہیں۔ جو کہ عیسائی مذہب سے تعلق رکھتی ہیں۔ مگر ان کی شادی حسن خان سے ہوئی ہے۔ جو کہ مسلمان ہیں۔ حال ہی میں ان کے بچوں کی آمین بھی ہوئی ہے۔ جس پر ان کے مداحوں نے ان کو خوب داد دی ہے۔

مشہور اداکارہ سُنیتا مارشل نے حال ہی میں ایک انٹرویو میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس ٹیکنالوجی کے دور میں ہم سوشل میڈیا ایپ انسٹا گرام پر اپنے فالورز ایک دوسرے سے زیادہ کرنے کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں۔ ہم ہر وقت اسی سوچ میں ڈوبے رہتے ہیں کہ ہم کیسے اپنے فالورز کو ایک دوسرے سے زیادہ کریں۔ اسی وجہ سے ہم بہت سے غلط کاموں میں پڑ جاتے ہیں۔ اب جونسی ماڈلیں شوبز انڈسٹری میں آ رہی ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ وہ چھوٹے کپڑے پہن کر بہت مشہور ہو جائیں گی، اور انہیں کام زیادہ سے زیادہ ملے گا۔

میں خود ایک کرسچن ہوں۔ ہم سب ایک اسلامی ملک میں رہتے ہیں۔ مگر آج تک میں نے کبھی بھی چھوٹے ڈریسز اور بیہودہ فیشن میں خود کو نہیں ڈھالہ۔ میں نے جب اپنے کام کو آغاز کیا تھا، اس وقت بھی اتنے کپڑے پہنتی تھی۔ جس سے میں لوگوں کے سامنے بغیر کسی شرم کے کھڑی رہ سکوں۔ اور لوگ مجھے گندی نظر سے نہ دیکھیں۔

:مذید دیکھیں اس ویڈیو میں

مجھے جب بھی کسی ماڈلنگ شو میں چھوٹے کپڑے پہننے کے لیے کہا گیا، تو میں یا تو اس کے خلاف اپنی آواز بلند کرتی تھی۔ یا پھر میں اس شو کو ٹھکرا دیتی تھی۔ میں یہ چاہتی ہوں کے آنے والی ماڈلز بھی اس غلط فہمی کو اپنے ذہنوں سے نکال دیں، اور مناسب لباس پہن کر اپنے ماں باپ کا نام روشن کریں۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,986FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles