26 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

جتنا انتقام ہونا تھا ہوگیا ، جتنا برداشت کرنا تھا کر لیا مریم نواز

لاہور25 مارچ2021ء پاکستان کی نائب صدرمریم نواز نے سخت لہجے میں کہا کہ انتظام ہو گیا ہے اور اب جتنا برداشت کرنا تھا کر لیا ، انتقام سہہ کر برداشت کرکے ان کو ایکسپوز کیا۔ مریم نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے کہا کہ نیب کو نیب کے افسان کے علاوہ سب چلا رہے ہیں لیکن میں دخترشیر ہوں اور میرا باپ نواز شریف ہے اور میں نے اس بات کا ارادہ کیا ہے کہ ان کے انتقام کو روکنا ہے، رواداری کی سیاست اور تعلقات میں کیسے چلنا ہے میں ان سب باتوں سے واقف ہوں۔

مریم نواز نے مزید بتایا کہ عمران خان کی سیاست اور حکومت پہ خطرہ منڈلا رہا ہے وہ اس لیے کہ مریم نواز کو نیب نہ بلاتے اگر عمران خان صاحب گحھر نہ جا رہے ہوتے ،اور نیب کو یہ ہرگز موقع نہیں ملے گا کہ عمران خان کی ڈوبتی نیا کو بچا سکے، پی ڈی ایم اپنی عوام کے مطابق فیصلہ کرے گی اور اس میں کسی اور ادارے کی شرکت نہیں ہو گی۔

دوسری طرف لاہور ہائیکورٹ نے مریم نواز کو 12 اپریل تک گرفتار کرنے سے روک دیا ، لاہور ہائیکورٹ نے نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز حفاظتی ضمانت 12 اپریل تک منظور کرتے ہوئے مریم نواز کو گرفتار کرنے سے روک دیا ، لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب بھی طلب کر لیا ہے۔ اس سے پہلے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے نیب میں پیشی سے قبل حفاظتی ضمانت کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی ، مریم نواز نے ممکنہ گرفتاری سے بچنے کے لیے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا ہے ، اس مقصد کے لیے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نیب نے دو انکوائریز میں 26 مارچ کو طلب کیا ہے ،مگر حکومتی دباؤ کی وجہ سے درخواست گزار کو گرفتا کیا جا سکتا ہے اسی لیے ہائیکورٹ عبوری ضمانت کی منظوری دے۔

لاہور25 مارچ2021ء پاکستان کی نائب صدرمریم نواز نے سخت لہجے میں کہا کہ انتظام ہو گیا ہے اور اب جتنا برداشت کرنا تھا کر لیا ، انتقام سہہ کر برداشت کرکے ان کو ایکسپوز کیا۔ مریم نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے کہا کہ نیب کو نیب کے افسان کے علاوہ سب چلا رہے ہیں لیکن میں دخترشیر ہوں اور میرا باپ نواز شریف ہے اور میں نے اس بات کا ارادہ کیا ہے کہ ان کے انتقام کو روکنا ہے، رواداری کی سیاست اور تعلقات میں کیسے چلنا ہے میں ان سب باتوں سے واقف ہوں۔

مریم نواز نے مزید بتایا کہ عمران خان کی سیاست اور حکومت پہ خطرہ منڈلا رہا ہے وہ اس لیے کہ مریم نواز کو نیب نہ بلاتے اگر عمران خان صاحب گحھر نہ جا رہے ہوتے ،اور نیب کو یہ ہرگز موقع نہیں ملے گا کہ عمران خان کی ڈوبتی نیا کو بچا سکے، پی ڈی ایم اپنی عوام کے مطابق فیصلہ کرے گی اور اس میں کسی اور ادارے کی شرکت نہیں ہو گی۔

دوسری طرف لاہور ہائیکورٹ نے مریم نواز کو 12 اپریل تک گرفتار کرنے سے روک دیا ، لاہور ہائیکورٹ نے نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز حفاظتی ضمانت 12 اپریل تک منظور کرتے ہوئے مریم نواز کو گرفتار کرنے سے روک دیا ، لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب بھی طلب کر لیا ہے۔ اس سے پہلے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے نیب میں پیشی سے قبل حفاظتی ضمانت کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی ، مریم نواز نے ممکنہ گرفتاری سے بچنے کے لیے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا ہے ، اس مقصد کے لیے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نیب نے دو انکوائریز میں 26 مارچ کو طلب کیا ہے ،مگر حکومتی دباؤ کی وجہ سے درخواست گزار کو گرفتا کیا جا سکتا ہے اسی لیے ہائیکورٹ عبوری ضمانت کی منظوری دے۔

لاہور25 مارچ2021ء پاکستان کی نائب صدرمریم نواز نے سخت لہجے میں کہا کہ انتظام ہو گیا ہے اور اب جتنا برداشت کرنا تھا کر لیا ، انتقام سہہ کر برداشت کرکے ان کو ایکسپوز کیا۔ مریم نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے کہا کہ نیب کو نیب کے افسان کے علاوہ سب چلا رہے ہیں لیکن میں دخترشیر ہوں اور میرا باپ نواز شریف ہے اور میں نے اس بات کا ارادہ کیا ہے کہ ان کے انتقام کو روکنا ہے، رواداری کی سیاست اور تعلقات میں کیسے چلنا ہے میں ان سب باتوں سے واقف ہوں۔

مریم نواز نے مزید بتایا کہ عمران خان کی سیاست اور حکومت پہ خطرہ منڈلا رہا ہے وہ اس لیے کہ مریم نواز کو نیب نہ بلاتے اگر عمران خان صاحب گحھر نہ جا رہے ہوتے ،اور نیب کو یہ ہرگز موقع نہیں ملے گا کہ عمران خان کی ڈوبتی نیا کو بچا سکے، پی ڈی ایم اپنی عوام کے مطابق فیصلہ کرے گی اور اس میں کسی اور ادارے کی شرکت نہیں ہو گی۔

دوسری طرف لاہور ہائیکورٹ نے مریم نواز کو 12 اپریل تک گرفتار کرنے سے روک دیا ، لاہور ہائیکورٹ نے نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز حفاظتی ضمانت 12 اپریل تک منظور کرتے ہوئے مریم نواز کو گرفتار کرنے سے روک دیا ، لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب بھی طلب کر لیا ہے۔ اس سے پہلے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے نیب میں پیشی سے قبل حفاظتی ضمانت کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی ، مریم نواز نے ممکنہ گرفتاری سے بچنے کے لیے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا ہے ، اس مقصد کے لیے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نیب نے دو انکوائریز میں 26 مارچ کو طلب کیا ہے ،مگر حکومتی دباؤ کی وجہ سے درخواست گزار کو گرفتا کیا جا سکتا ہے اسی لیے ہائیکورٹ عبوری ضمانت کی منظوری دے۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles