25 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

جنسی زیادتی کا شکار

نینا کو نائٹ پارٹی سے واپسی پر اغوا کر کے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

پشاور (تازہ ترین) : پشاور میں خواجہ سرا کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق پشاور کے علاقہ فقیر آباد چابیانو کلے میں ملزمان نے خواجہ سرا سے جنسی زیادتی کرنے کے بعد تشدد کر کے اسے گنجا کردیا۔ ملزمان نے خواجہ سرا کو رات گئے بلا کر زیادتی کی۔

خواجہ سرا نینا گذشتہ روز اپنی دوستوں کے ہمراہ پارٹی کے لیے گئی تھی جہاں سے واپسی پر اسے اغوا کر لیا گیا۔ پولیس تھانہ فقیر آباد نے واقعہ کی رپورٹ درج کرکے قانونی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

یہاں یہ امر بھی قابل غور ہے رہے کہ گذشتہ روز بھی گوجرانوالہ میں دو خواجہ سراؤں کو بے دردی سے قتل کر دیا گیا تھا۔ شہزادی اور زینی نامی خواجہ سراؤں کو سر میں گولیاں مار کر بے رحمی کے قتل کیا گیا۔ جبکہ اس سے قبل بھی خواجہ سراؤں پر جنسی و جسمانی تشدد کے واقعات سامنے آتے رہے ہیں۔

اس سے قبل بھی گذشتہ ماہ معاشرے کے تلخ رویوں کا شکار ایک خواجہ سرا کو کچھ ملزمان نے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ جبکہ سیالکوٹ میں بھی بااثر افراد نے خواجہ سرا کو آہنی راڈ کے وار کرکے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا، بعد ازاں اس افسوسناک واقعہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہو ئی جسے دیکھ کر صارفین نے شدید غم و غصے کا اظہار کیا۔

افسوس ناک بات تو یہ کہ جہاں حکومت کو ان افراد کو تحفظ دینا چاہیئے وہیں اس ویڈیو کے وائرل ہونے کے بعد ڈی پی او آفس نے اس معاملے پر مؤقف دینے سے بالکل انکار کر دیا، جبکہ خواجہ سرا کمیونٹی نے واقعہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے انصاف کا مطالبہ کیا تھا۔ دوسری جانب آئی جی پنجاب نے سیالکوٹ میں خواجہ سرائوں پر تشدد کے ان واقعات کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او گوجرانوالہ سے رپورٹ طلب کر لی اور حکم دیا کہ خواجہ سرائوں پر تشدد میں ملوث ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کر کے سخت قانونی کارروائی کی جائے۔

نینا کو نائٹ پارٹی سے واپسی پر اغوا کر کے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

پشاور (تازہ ترین) : پشاور میں خواجہ سرا کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق پشاور کے علاقہ فقیر آباد چابیانو کلے میں ملزمان نے خواجہ سرا سے جنسی زیادتی کرنے کے بعد تشدد کر کے اسے گنجا کردیا۔ ملزمان نے خواجہ سرا کو رات گئے بلا کر زیادتی کی۔

خواجہ سرا نینا گذشتہ روز اپنی دوستوں کے ہمراہ پارٹی کے لیے گئی تھی جہاں سے واپسی پر اسے اغوا کر لیا گیا۔ پولیس تھانہ فقیر آباد نے واقعہ کی رپورٹ درج کرکے قانونی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

یہاں یہ امر بھی قابل غور ہے رہے کہ گذشتہ روز بھی گوجرانوالہ میں دو خواجہ سراؤں کو بے دردی سے قتل کر دیا گیا تھا۔ شہزادی اور زینی نامی خواجہ سراؤں کو سر میں گولیاں مار کر بے رحمی کے قتل کیا گیا۔ جبکہ اس سے قبل بھی خواجہ سراؤں پر جنسی و جسمانی تشدد کے واقعات سامنے آتے رہے ہیں۔

اس سے قبل بھی گذشتہ ماہ معاشرے کے تلخ رویوں کا شکار ایک خواجہ سرا کو کچھ ملزمان نے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ جبکہ سیالکوٹ میں بھی بااثر افراد نے خواجہ سرا کو آہنی راڈ کے وار کرکے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا، بعد ازاں اس افسوسناک واقعہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہو ئی جسے دیکھ کر صارفین نے شدید غم و غصے کا اظہار کیا۔

افسوس ناک بات تو یہ کہ جہاں حکومت کو ان افراد کو تحفظ دینا چاہیئے وہیں اس ویڈیو کے وائرل ہونے کے بعد ڈی پی او آفس نے اس معاملے پر مؤقف دینے سے بالکل انکار کر دیا، جبکہ خواجہ سرا کمیونٹی نے واقعہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے انصاف کا مطالبہ کیا تھا۔ دوسری جانب آئی جی پنجاب نے سیالکوٹ میں خواجہ سرائوں پر تشدد کے ان واقعات کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او گوجرانوالہ سے رپورٹ طلب کر لی اور حکم دیا کہ خواجہ سرائوں پر تشدد میں ملوث ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کر کے سخت قانونی کارروائی کی جائے۔

نینا کو نائٹ پارٹی سے واپسی پر اغوا کر کے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

پشاور (تازہ ترین) : پشاور میں خواجہ سرا کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق پشاور کے علاقہ فقیر آباد چابیانو کلے میں ملزمان نے خواجہ سرا سے جنسی زیادتی کرنے کے بعد تشدد کر کے اسے گنجا کردیا۔ ملزمان نے خواجہ سرا کو رات گئے بلا کر زیادتی کی۔

خواجہ سرا نینا گذشتہ روز اپنی دوستوں کے ہمراہ پارٹی کے لیے گئی تھی جہاں سے واپسی پر اسے اغوا کر لیا گیا۔ پولیس تھانہ فقیر آباد نے واقعہ کی رپورٹ درج کرکے قانونی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

یہاں یہ امر بھی قابل غور ہے رہے کہ گذشتہ روز بھی گوجرانوالہ میں دو خواجہ سراؤں کو بے دردی سے قتل کر دیا گیا تھا۔ شہزادی اور زینی نامی خواجہ سراؤں کو سر میں گولیاں مار کر بے رحمی کے قتل کیا گیا۔ جبکہ اس سے قبل بھی خواجہ سراؤں پر جنسی و جسمانی تشدد کے واقعات سامنے آتے رہے ہیں۔

اس سے قبل بھی گذشتہ ماہ معاشرے کے تلخ رویوں کا شکار ایک خواجہ سرا کو کچھ ملزمان نے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ جبکہ سیالکوٹ میں بھی بااثر افراد نے خواجہ سرا کو آہنی راڈ کے وار کرکے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا، بعد ازاں اس افسوسناک واقعہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہو ئی جسے دیکھ کر صارفین نے شدید غم و غصے کا اظہار کیا۔

افسوس ناک بات تو یہ کہ جہاں حکومت کو ان افراد کو تحفظ دینا چاہیئے وہیں اس ویڈیو کے وائرل ہونے کے بعد ڈی پی او آفس نے اس معاملے پر مؤقف دینے سے بالکل انکار کر دیا، جبکہ خواجہ سرا کمیونٹی نے واقعہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے انصاف کا مطالبہ کیا تھا۔ دوسری جانب آئی جی پنجاب نے سیالکوٹ میں خواجہ سرائوں پر تشدد کے ان واقعات کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او گوجرانوالہ سے رپورٹ طلب کر لی اور حکم دیا کہ خواجہ سرائوں پر تشدد میں ملوث ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کر کے سخت قانونی کارروائی کی جائے۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles