25 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

پنجاب میں شادیوں پر مکمل پابندی

لاہور(29 مارچ 2021ء) پنجاب میں یکم اپریل سے کوئی بھی شادی نہیں ہوگی. وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکورونا کابینہ کمیٹی کے اجلاس میں ان مشکل حالات سے نمٹنے کے بارے میں اہم فیصلے کئے گئے ہیں اور کورونا کو قابو میں رکھنے کے لیے سخت اقدامات کیے گئے ہیں. کابینہ کمیٹی نے این سی او سی کے فیصلوں پر مکمل طور پر عمل کرنے کی منظوری دی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ صوبے بھر میں مائیکرو سمارٹ لاک ڈاﺅن کی پالیسی اختیار کی جائے گی.

وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بیان کیا کہ صوبہ پنجاب کے وہ تمام اضلاح جہاں کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کی شرح 12 فیصد سے زیادہ ہے ان ضلوں میں مکمل طور پر لاکڈاؤن نافز کیا جائے گا.وزیراعلیٰ نے یہ اعلان کیا ہے کہ لاک ڈاؤن 1اپریل سے لے کر 11اپریل تک لگے گا اور اس کے بعد کابینہ کمیٹی 7 روز بعد حالات کو دیکھ کہ اپنا فیصلہ دے گی۔معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاش اعوان کے ساتھ کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کورونا کے مطلق کابینہ کمیٹی کے فیصلوں سے عوام کو آگہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے معاشی سرگرمیوں معمول کے مطابق برقرار رہیں گی، تعمیراتی صنعت، اشیا کی صنعت، ٹرانسپورٹ ایس او پیز کے تحت اپنا کام جاری رکھیں گے ان پر کسی قسم کی پابندی نہیں عائد ہوگی۔ صوبے میں یکم اپریل سے شادی کی تقریبات پر مکمل پابندی عائدی ہوگی، میرج ہالز بند ہوں گے، اور پھر گھروں میں یا گھروں سے باہر کسی بھی قسم کے فنکشن نہیں ہوں گے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ ماس ٹرانزٹ ٹرانسپورٹ بھی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں میٹرو، اورنج ٹرین اور اسپیڈو وغیرہ شامل ہیں تمام اقسام کے ریسٹورنٹس، ہوٹلوں پر ان ڈور اور آﺅٹ ڈور ڈائننگ پر پابندی ہوگی تاہم کھانا خرید کر لے جانے یا گھر پر منگوانے کی اجازت ہوگی اسپورٹس، ثقافتی سرگرمیاں، سماجی تقریبات پر پابندی برقرار رہے گی. پارکس بند رکھے جائیں گے، کاروبارشام 6 بجے تک چلیں گے اس کے بعد سب کاروبار بند کورونا کے مطلق آگاہ کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے بتایا کہ صوبے میں مثبت کیسز کی تعداد 23 ہزار، تشویشناک مریضوں کی تعداد 252 ہے

لاہور(29 مارچ 2021ء) پنجاب میں یکم اپریل سے کوئی بھی شادی نہیں ہوگی. وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکورونا کابینہ کمیٹی کے اجلاس میں ان مشکل حالات سے نمٹنے کے بارے میں اہم فیصلے کئے گئے ہیں اور کورونا کو قابو میں رکھنے کے لیے سخت اقدامات کیے گئے ہیں. کابینہ کمیٹی نے این سی او سی کے فیصلوں پر مکمل طور پر عمل کرنے کی منظوری دی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ صوبے بھر میں مائیکرو سمارٹ لاک ڈاﺅن کی پالیسی اختیار کی جائے گی.

وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بیان کیا کہ صوبہ پنجاب کے وہ تمام اضلاح جہاں کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کی شرح 12 فیصد سے زیادہ ہے ان ضلوں میں مکمل طور پر لاکڈاؤن نافز کیا جائے گا.وزیراعلیٰ نے یہ اعلان کیا ہے کہ لاک ڈاؤن 1اپریل سے لے کر 11اپریل تک لگے گا اور اس کے بعد کابینہ کمیٹی 7 روز بعد حالات کو دیکھ کہ اپنا فیصلہ دے گی۔معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاش اعوان کے ساتھ کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کورونا کے مطلق کابینہ کمیٹی کے فیصلوں سے عوام کو آگہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے معاشی سرگرمیوں معمول کے مطابق برقرار رہیں گی، تعمیراتی صنعت، اشیا کی صنعت، ٹرانسپورٹ ایس او پیز کے تحت اپنا کام جاری رکھیں گے ان پر کسی قسم کی پابندی نہیں عائد ہوگی۔ صوبے میں یکم اپریل سے شادی کی تقریبات پر مکمل پابندی عائدی ہوگی، میرج ہالز بند ہوں گے، اور پھر گھروں میں یا گھروں سے باہر کسی بھی قسم کے فنکشن نہیں ہوں گے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ ماس ٹرانزٹ ٹرانسپورٹ بھی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں میٹرو، اورنج ٹرین اور اسپیڈو وغیرہ شامل ہیں تمام اقسام کے ریسٹورنٹس، ہوٹلوں پر ان ڈور اور آﺅٹ ڈور ڈائننگ پر پابندی ہوگی تاہم کھانا خرید کر لے جانے یا گھر پر منگوانے کی اجازت ہوگی اسپورٹس، ثقافتی سرگرمیاں، سماجی تقریبات پر پابندی برقرار رہے گی. پارکس بند رکھے جائیں گے، کاروبارشام 6 بجے تک چلیں گے اس کے بعد سب کاروبار بند کورونا کے مطلق آگاہ کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے بتایا کہ صوبے میں مثبت کیسز کی تعداد 23 ہزار، تشویشناک مریضوں کی تعداد 252 ہے

لاہور(29 مارچ 2021ء) پنجاب میں یکم اپریل سے کوئی بھی شادی نہیں ہوگی. وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکورونا کابینہ کمیٹی کے اجلاس میں ان مشکل حالات سے نمٹنے کے بارے میں اہم فیصلے کئے گئے ہیں اور کورونا کو قابو میں رکھنے کے لیے سخت اقدامات کیے گئے ہیں. کابینہ کمیٹی نے این سی او سی کے فیصلوں پر مکمل طور پر عمل کرنے کی منظوری دی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ صوبے بھر میں مائیکرو سمارٹ لاک ڈاﺅن کی پالیسی اختیار کی جائے گی.

وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بیان کیا کہ صوبہ پنجاب کے وہ تمام اضلاح جہاں کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کی شرح 12 فیصد سے زیادہ ہے ان ضلوں میں مکمل طور پر لاکڈاؤن نافز کیا جائے گا.وزیراعلیٰ نے یہ اعلان کیا ہے کہ لاک ڈاؤن 1اپریل سے لے کر 11اپریل تک لگے گا اور اس کے بعد کابینہ کمیٹی 7 روز بعد حالات کو دیکھ کہ اپنا فیصلہ دے گی۔معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاش اعوان کے ساتھ کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کورونا کے مطلق کابینہ کمیٹی کے فیصلوں سے عوام کو آگہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے معاشی سرگرمیوں معمول کے مطابق برقرار رہیں گی، تعمیراتی صنعت، اشیا کی صنعت، ٹرانسپورٹ ایس او پیز کے تحت اپنا کام جاری رکھیں گے ان پر کسی قسم کی پابندی نہیں عائد ہوگی۔ صوبے میں یکم اپریل سے شادی کی تقریبات پر مکمل پابندی عائدی ہوگی، میرج ہالز بند ہوں گے، اور پھر گھروں میں یا گھروں سے باہر کسی بھی قسم کے فنکشن نہیں ہوں گے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ ماس ٹرانزٹ ٹرانسپورٹ بھی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں میٹرو، اورنج ٹرین اور اسپیڈو وغیرہ شامل ہیں تمام اقسام کے ریسٹورنٹس، ہوٹلوں پر ان ڈور اور آﺅٹ ڈور ڈائننگ پر پابندی ہوگی تاہم کھانا خرید کر لے جانے یا گھر پر منگوانے کی اجازت ہوگی اسپورٹس، ثقافتی سرگرمیاں، سماجی تقریبات پر پابندی برقرار رہے گی. پارکس بند رکھے جائیں گے، کاروبارشام 6 بجے تک چلیں گے اس کے بعد سب کاروبار بند کورونا کے مطلق آگاہ کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے بتایا کہ صوبے میں مثبت کیسز کی تعداد 23 ہزار، تشویشناک مریضوں کی تعداد 252 ہے

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles