26 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

ملاوٹ والے دودھ کو چیک کرنے کے 4 آسان طریقے، جو آپ کی صحت کے لیے مفید ہیں

دودھ اللہ کی ایک ایسی نعمت ہے جو کہ، دنیا کے آغاز سے ہی انسانوں کے لیے نہایت فائدہ مند ہے۔ مگر کچھ احمق لوگوں نے اس بیش قیمت رحمت کو بھی زحمت بنا کر رکھ دیا ہے۔ یہ احمق لوگ اس میں ایسی چیزوں کے ملاوٹ کر دیتے ہیں، جس کی وجہ سے یہ رحمت لوگوں کے لیے بہت نقصان دہ چیز بن جاتی ہے۔ زیادہ تر دودھ کو ٹیسٹ کرنے کا آسان طریقہ لیبارٹری میں ہی ہوتا ہے۔ لیکن آج کے اس آرٹئیکل میں ہم آپ کو دودھ ٹیسٹ کرنے کے ایسے طریقے بتائیں گے، جن سے آپ با آسانی گھر پر ہی دودھ چیک کر سکتے ہیں۔

:اسٹارچ ٹیسٹ

ہمارے محلوں میں بہت سے لوگ اس بات پر پختہ یقین رکھتے ہیں کہ، ان کے گھر بلکل خالص دودھ آتا ہے۔ وہ اس بات کو ثبوت اس صورت میں دیتے ہیں کہ، جب دودھ کو اُبالتے ہیں۔ تو اس پر ملائی کی ایک موٹی پرت آ جاتی ہے۔ وہ اس ملائی کو دیکھ کر یہی سمجھتے ہیں کہ، ان کا دودھ خالص ہے۔ مگر اندر کی بات تو یہ ہے کہ دودھ دینے والے لوگ پہلے تو دودھ میں پانی ملاتے ہیں۔ اس کے بعد دودھ کا پتلا پن ختم کرنے کے لیے اس میں اسٹارچ کو شامل کر دیتے ہیں۔

ایسا کرنے سے دودھ گاڑا ہو جاتا ہے، اور اس کے اُوپر ملائی کی بھی ایک موٹی پرت آ جاتی ہے۔ اگر آپ یہ چیک کرنا چاہتے ہیں، تو دودھ کو کسی برتن میں ڈالیں۔ اس کے بعد اس میں آیوڈین نمک کا ایک چمچ اس میں ڈال دیں۔ اگر دودھ کا رنگ نیلا پڑ جائے، تو سمجھ لیں کے دودھ میں ملاوٹ ہوئی ہے۔ پھر دوبارہ کبھی اس دودھ والے سے دودھ نہ لیں۔

:کھویا بنانے کا ٹیسٹ

یہ طریقہ آزمانے کے لیے تھوڑا سا دودھ علیعدہ کر کے اسے چولہے پر رکھ دیں۔ دودھ کو چولہے پر رکھنے کے بعد اس کو چمچ سے تھوڑی تھوڑی دیر بعد ہلاتے رہیں۔ جب تک دودھ خشک نہ ہو چولہا جلتا رہنے دیں۔ جب دودھ ایک دم خشک ہو جائے گا، تو آپ کو اس میں سے کھویا حاصل ہو جائے گا۔ اس کے بعد دودھ کو ہاتھ لگائیں۔ اگر دودھ چکنا ہو گا، تو سمجھ لیں کہ دودھ ملاوٹ سے پاک ہے۔ لیکن اگر دودھ میں چکناہٹ نہ ہو، تو دودھ خالص نہیں ہے۔

:دودھ میں پانی کی ملاوٹ کا ٹیسٹ

یہ ٹیسٹ کرنے کے لیے آپ کو ایک سٹیل کی ٹرے کی ضرورت ہو گی۔ سٹیل کی ٹرے کو دیوار کے ساتھ اس طرح رکھیں کہ اس کی سلائڈ بن جائے۔ اس کے بعد اس پر دودھ کا ایک قطرہ ڈالیں۔ دودھ کا قطرہ جب آپ اس ٹرے پر ڈالیں گے، تو دودھ کا قطرہ نیچے کی طرف بہنا شروع ہو گا۔ اس قطرے کے پیچھے ایک لائن بنے گی۔ اگر وہ لائن پیچھے سے بھی سفید ہی رہے گی، تو سمجھ لیں کہ دودھ پانی سے پاک ہے۔ لیکن اگر دودھ کا قطرہ ایک دم سے نیچے کی طرف آ جائے، اور اس کے پیچھے کوئی بھی لائن نہ بنے۔ تو آپ کے دودھ میں پانی کی ملاوٹ ہوئی ہے، اور وہ خالص نہیں ہے۔

:دودھ کے نام پر سفید محلول کو جانچنے کا ٹیسٹ

مارکیٹوں میں لوگ دودھ میں ملاوٹ نہیں کرتے۔ وہ ایک کیمکل کو پانی میں ملا کر دودھ بنا دیتے ہیں۔ جو کہ انسانی صحت کے لیے زہر کے برابر ہے۔ ایسے دوھ کی سب سے بڑی نشانی یہ ہے، کہ جب اس دودھ کو اُبالا جائے، تو اس کا رنگ ہلکی سی پلاہٹ مارتا ہے۔ جس سے یہ صاف پتا چل جائے گا کہ یہ دوھ صرف کیمکل پر مشتمل ہے، اور اس میں ذرا سا بھی خالص پن نہیں ہے۔

یہ سارے طریقے ایسے ہیں، جو کہ آپ اپنے گھروں پر بغیر کسی رکاوٹ کے کر سکتے ہیں، اور اپنی صحت کو محفوظ کر سکتے ہیں۔

دودھ اللہ کی ایک ایسی نعمت ہے جو کہ، دنیا کے آغاز سے ہی انسانوں کے لیے نہایت فائدہ مند ہے۔ مگر کچھ احمق لوگوں نے اس بیش قیمت رحمت کو بھی زحمت بنا کر رکھ دیا ہے۔ یہ احمق لوگ اس میں ایسی چیزوں کے ملاوٹ کر دیتے ہیں، جس کی وجہ سے یہ رحمت لوگوں کے لیے بہت نقصان دہ چیز بن جاتی ہے۔ زیادہ تر دودھ کو ٹیسٹ کرنے کا آسان طریقہ لیبارٹری میں ہی ہوتا ہے۔ لیکن آج کے اس آرٹئیکل میں ہم آپ کو دودھ ٹیسٹ کرنے کے ایسے طریقے بتائیں گے، جن سے آپ با آسانی گھر پر ہی دودھ چیک کر سکتے ہیں۔

:اسٹارچ ٹیسٹ

ہمارے محلوں میں بہت سے لوگ اس بات پر پختہ یقین رکھتے ہیں کہ، ان کے گھر بلکل خالص دودھ آتا ہے۔ وہ اس بات کو ثبوت اس صورت میں دیتے ہیں کہ، جب دودھ کو اُبالتے ہیں۔ تو اس پر ملائی کی ایک موٹی پرت آ جاتی ہے۔ وہ اس ملائی کو دیکھ کر یہی سمجھتے ہیں کہ، ان کا دودھ خالص ہے۔ مگر اندر کی بات تو یہ ہے کہ دودھ دینے والے لوگ پہلے تو دودھ میں پانی ملاتے ہیں۔ اس کے بعد دودھ کا پتلا پن ختم کرنے کے لیے اس میں اسٹارچ کو شامل کر دیتے ہیں۔

ایسا کرنے سے دودھ گاڑا ہو جاتا ہے، اور اس کے اُوپر ملائی کی بھی ایک موٹی پرت آ جاتی ہے۔ اگر آپ یہ چیک کرنا چاہتے ہیں، تو دودھ کو کسی برتن میں ڈالیں۔ اس کے بعد اس میں آیوڈین نمک کا ایک چمچ اس میں ڈال دیں۔ اگر دودھ کا رنگ نیلا پڑ جائے، تو سمجھ لیں کے دودھ میں ملاوٹ ہوئی ہے۔ پھر دوبارہ کبھی اس دودھ والے سے دودھ نہ لیں۔

:کھویا بنانے کا ٹیسٹ

یہ طریقہ آزمانے کے لیے تھوڑا سا دودھ علیعدہ کر کے اسے چولہے پر رکھ دیں۔ دودھ کو چولہے پر رکھنے کے بعد اس کو چمچ سے تھوڑی تھوڑی دیر بعد ہلاتے رہیں۔ جب تک دودھ خشک نہ ہو چولہا جلتا رہنے دیں۔ جب دودھ ایک دم خشک ہو جائے گا، تو آپ کو اس میں سے کھویا حاصل ہو جائے گا۔ اس کے بعد دودھ کو ہاتھ لگائیں۔ اگر دودھ چکنا ہو گا، تو سمجھ لیں کہ دودھ ملاوٹ سے پاک ہے۔ لیکن اگر دودھ میں چکناہٹ نہ ہو، تو دودھ خالص نہیں ہے۔

:دودھ میں پانی کی ملاوٹ کا ٹیسٹ

یہ ٹیسٹ کرنے کے لیے آپ کو ایک سٹیل کی ٹرے کی ضرورت ہو گی۔ سٹیل کی ٹرے کو دیوار کے ساتھ اس طرح رکھیں کہ اس کی سلائڈ بن جائے۔ اس کے بعد اس پر دودھ کا ایک قطرہ ڈالیں۔ دودھ کا قطرہ جب آپ اس ٹرے پر ڈالیں گے، تو دودھ کا قطرہ نیچے کی طرف بہنا شروع ہو گا۔ اس قطرے کے پیچھے ایک لائن بنے گی۔ اگر وہ لائن پیچھے سے بھی سفید ہی رہے گی، تو سمجھ لیں کہ دودھ پانی سے پاک ہے۔ لیکن اگر دودھ کا قطرہ ایک دم سے نیچے کی طرف آ جائے، اور اس کے پیچھے کوئی بھی لائن نہ بنے۔ تو آپ کے دودھ میں پانی کی ملاوٹ ہوئی ہے، اور وہ خالص نہیں ہے۔

:دودھ کے نام پر سفید محلول کو جانچنے کا ٹیسٹ

مارکیٹوں میں لوگ دودھ میں ملاوٹ نہیں کرتے۔ وہ ایک کیمکل کو پانی میں ملا کر دودھ بنا دیتے ہیں۔ جو کہ انسانی صحت کے لیے زہر کے برابر ہے۔ ایسے دوھ کی سب سے بڑی نشانی یہ ہے، کہ جب اس دودھ کو اُبالا جائے، تو اس کا رنگ ہلکی سی پلاہٹ مارتا ہے۔ جس سے یہ صاف پتا چل جائے گا کہ یہ دوھ صرف کیمکل پر مشتمل ہے، اور اس میں ذرا سا بھی خالص پن نہیں ہے۔

یہ سارے طریقے ایسے ہیں، جو کہ آپ اپنے گھروں پر بغیر کسی رکاوٹ کے کر سکتے ہیں، اور اپنی صحت کو محفوظ کر سکتے ہیں۔

دودھ اللہ کی ایک ایسی نعمت ہے جو کہ، دنیا کے آغاز سے ہی انسانوں کے لیے نہایت فائدہ مند ہے۔ مگر کچھ احمق لوگوں نے اس بیش قیمت رحمت کو بھی زحمت بنا کر رکھ دیا ہے۔ یہ احمق لوگ اس میں ایسی چیزوں کے ملاوٹ کر دیتے ہیں، جس کی وجہ سے یہ رحمت لوگوں کے لیے بہت نقصان دہ چیز بن جاتی ہے۔ زیادہ تر دودھ کو ٹیسٹ کرنے کا آسان طریقہ لیبارٹری میں ہی ہوتا ہے۔ لیکن آج کے اس آرٹئیکل میں ہم آپ کو دودھ ٹیسٹ کرنے کے ایسے طریقے بتائیں گے، جن سے آپ با آسانی گھر پر ہی دودھ چیک کر سکتے ہیں۔

:اسٹارچ ٹیسٹ

ہمارے محلوں میں بہت سے لوگ اس بات پر پختہ یقین رکھتے ہیں کہ، ان کے گھر بلکل خالص دودھ آتا ہے۔ وہ اس بات کو ثبوت اس صورت میں دیتے ہیں کہ، جب دودھ کو اُبالتے ہیں۔ تو اس پر ملائی کی ایک موٹی پرت آ جاتی ہے۔ وہ اس ملائی کو دیکھ کر یہی سمجھتے ہیں کہ، ان کا دودھ خالص ہے۔ مگر اندر کی بات تو یہ ہے کہ دودھ دینے والے لوگ پہلے تو دودھ میں پانی ملاتے ہیں۔ اس کے بعد دودھ کا پتلا پن ختم کرنے کے لیے اس میں اسٹارچ کو شامل کر دیتے ہیں۔

ایسا کرنے سے دودھ گاڑا ہو جاتا ہے، اور اس کے اُوپر ملائی کی بھی ایک موٹی پرت آ جاتی ہے۔ اگر آپ یہ چیک کرنا چاہتے ہیں، تو دودھ کو کسی برتن میں ڈالیں۔ اس کے بعد اس میں آیوڈین نمک کا ایک چمچ اس میں ڈال دیں۔ اگر دودھ کا رنگ نیلا پڑ جائے، تو سمجھ لیں کے دودھ میں ملاوٹ ہوئی ہے۔ پھر دوبارہ کبھی اس دودھ والے سے دودھ نہ لیں۔

:کھویا بنانے کا ٹیسٹ

یہ طریقہ آزمانے کے لیے تھوڑا سا دودھ علیعدہ کر کے اسے چولہے پر رکھ دیں۔ دودھ کو چولہے پر رکھنے کے بعد اس کو چمچ سے تھوڑی تھوڑی دیر بعد ہلاتے رہیں۔ جب تک دودھ خشک نہ ہو چولہا جلتا رہنے دیں۔ جب دودھ ایک دم خشک ہو جائے گا، تو آپ کو اس میں سے کھویا حاصل ہو جائے گا۔ اس کے بعد دودھ کو ہاتھ لگائیں۔ اگر دودھ چکنا ہو گا، تو سمجھ لیں کہ دودھ ملاوٹ سے پاک ہے۔ لیکن اگر دودھ میں چکناہٹ نہ ہو، تو دودھ خالص نہیں ہے۔

:دودھ میں پانی کی ملاوٹ کا ٹیسٹ

یہ ٹیسٹ کرنے کے لیے آپ کو ایک سٹیل کی ٹرے کی ضرورت ہو گی۔ سٹیل کی ٹرے کو دیوار کے ساتھ اس طرح رکھیں کہ اس کی سلائڈ بن جائے۔ اس کے بعد اس پر دودھ کا ایک قطرہ ڈالیں۔ دودھ کا قطرہ جب آپ اس ٹرے پر ڈالیں گے، تو دودھ کا قطرہ نیچے کی طرف بہنا شروع ہو گا۔ اس قطرے کے پیچھے ایک لائن بنے گی۔ اگر وہ لائن پیچھے سے بھی سفید ہی رہے گی، تو سمجھ لیں کہ دودھ پانی سے پاک ہے۔ لیکن اگر دودھ کا قطرہ ایک دم سے نیچے کی طرف آ جائے، اور اس کے پیچھے کوئی بھی لائن نہ بنے۔ تو آپ کے دودھ میں پانی کی ملاوٹ ہوئی ہے، اور وہ خالص نہیں ہے۔

:دودھ کے نام پر سفید محلول کو جانچنے کا ٹیسٹ

مارکیٹوں میں لوگ دودھ میں ملاوٹ نہیں کرتے۔ وہ ایک کیمکل کو پانی میں ملا کر دودھ بنا دیتے ہیں۔ جو کہ انسانی صحت کے لیے زہر کے برابر ہے۔ ایسے دوھ کی سب سے بڑی نشانی یہ ہے، کہ جب اس دودھ کو اُبالا جائے، تو اس کا رنگ ہلکی سی پلاہٹ مارتا ہے۔ جس سے یہ صاف پتا چل جائے گا کہ یہ دوھ صرف کیمکل پر مشتمل ہے، اور اس میں ذرا سا بھی خالص پن نہیں ہے۔

یہ سارے طریقے ایسے ہیں، جو کہ آپ اپنے گھروں پر بغیر کسی رکاوٹ کے کر سکتے ہیں، اور اپنی صحت کو محفوظ کر سکتے ہیں۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles