25 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

روزانہ کی جانیں والی 7 ایسی غلطیاں، جو آپ کی عادت بن چکی ہیں

وزن کم کرنے کے لیے متناسب غذا، روزانہ ورزش اور سوچا سمجھا منصوبہ آپ کو وزن کم کرنے میں مدد فراہم نہیں کر سکتا۔ وزن کم کرنے کے لیے روزانہ کی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھنی ہو گی۔ جن پر کوئی بھی غور نہیں کرتا۔ ہم آپ کو آج اس آرٹیکل میں 7 ایسی غلطیاں بتائیں گے۔ جو آپ روزانہ کرتے ہیں۔ لیکن ان سے آپ کا وزن کم نہیں ہوتا۔ اور سب سے بڑی بات یہ ہے، کہ اکثر آپ ان غلطیوں کو غلطی تصور نہیں کرتے۔

:دوپہر کا کھانا چھوڑنا

اکثر لوگ دوپہر کو کھانا نہیں کھاتے، ان کا کہنا ہوتا ہے۔ کہ وہ دوپہر کو ہلکی غذا کھاتے ہیں۔ لیکن بعض کا کہنا ہوتا ہے کہ وہ کام کی مصروفیت کی وجہ سے کھانا نہیں کھا سکے۔ لیکن یاد رکھیں جب آپ اپنے جسم کو خوراک سے محروم رکھتے ہیں، تو اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ آپنے جسم کو دباؤ کا شکار بنا رہے ہیں۔ اس سے آپ کے جسم کے نیورونز میں توازن برقرار نہیں رہتا۔ اور پھر آپ کے جسم کی چربی کم ہونے کا عمل بھی بہت سست ہو جاتا ہے۔ اور پھر جب آپ رات کا کھانا کھاتے ہیں، تو آپ کی بھوک بھی بڑھ جاتی ہے۔ اس لیے آپ پھر اپنی خوراک کے علاوہ دوسرے کھانوں کو بھی ترجیع دیتے ہیں۔

:جسم سے چپکی ہوئی جینز پہننا

اکثر لوگ ٹائٹ جینز اس لیے پہنتے ہیں، کہ وہ سمارٹ نظر آئیں۔ لیکن یہ عمل بار بار دہرانے سے آپ کو بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اسی ٹائٹ جینز پہننے کی وجہ سے آپ کی جلد دباؤ کا شکار ہوتی ہے۔ اور پھر آپ کے پٹھے بھی صحیع طریقے سے گردش نہیں کر پاتے۔ ایک لمبے عرصے تک پٹھے جب دباؤ میں رہتے ہیں تو پٹھے سست پڑ جاتے ہیں۔ اس لیے آپ کو چاہیئے کہ ایسی جینز کا انتخاب کریں، جو کہ ڈھیلی اور کھلی ہوں۔ چپکی ہوئی نہ ہوں۔

:بادام کے دودھ کا استعمال

جب آپ کو عام دودھ سے کوئی مسئلہ نہیں ہے، تو پھر بادام کے دودھ کا استعمال آپ کے لیے بہت خطرناک ہے۔ خاص طور پر اس وقت جب آپ وزن کم کرنے کی کوشش کر رہے ہوں۔ ایسے افراد جو ڈیری اشیا کا استعمال زیادہ کرتے ہیں۔ ان کے میٹابولزم بھی زیادہ اچھے طریقے سے کام کرتے ہیں۔ اور وہ شخص موٹاپے سے بھی بچے رہتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ عام دودھ میں کیلشیم پایا جاتا ہے۔ لیکن یہ سب اس وقت ممکن ہے، جب آپ دودھ کے ساتھ متوازن غذا کو بھی کھائیں۔

:کاربو ہائیڈریٹس اور صحت بخش چربی سے بچنا

اکثر لوگ وزن کم کرنے کے لیے غذائی کھانے کو ترجیع نہیں دیتے۔ لیکن ایسا کرنے سے آپ دل کی بیماری اور مدافعتی کمزوریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔ کھانے میں کاربوہائیڈریٹس اور صحت بخش چربی کو شامل نہ کرنے سے آپ کا غذائی توازن برقرار نہیں رہے گا۔ اور پھر آپ کے وزن میں بھی مزید اضافہ ہو گا۔

:روزانہ ورزش کرنا

روزانہ ورزش کرنے سے آپ کا جسم بہت حد تک فٹ رہتا ہے، اس سے آپ اپنے موٹاپے کو بھی کنٹرول میں رکھ سکتے ہیں۔تناؤ کی سطع کا کم کرنے کے لیے ورزش ایک حیرت انگیز طریقہ ہے۔ لیکن روزانہ ورزش کرنے کے فائدے بھی ہیں، لیکن نقصان بھی ہیں۔ روزانہ ورزش کرنے سے آپ کے جسم میں کولیسٹرول کی مقدار بڑھ جاتی ہے۔ اور پھر آپ کے جسم میں چربی بھی زیادہ ہو جاتی ہے۔ ماہرین کی ایک ریسرچ کے مطابق ورزش ہفتے میں 150 منٹ تک کرنی چاہیئے۔

:مصنوعی میٹھے سے پرہیز کرنا

مصنوعی میٹھے کو کم کرنے سے آپ کچھ کیلوریز کو کم کر سکتے ہیں، لیکن زیادہ عرصے تک اس کا استعمال نہ کرنے سے آپ مختلف اور سنگین بیماریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔ اور پھع ایسا کرنے سے آپ کا وزن بھی کم نہیں ہو گا۔ بلکہ آپ ذیابیطس اور موٹاپے جیسی خطرناک بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔ ایک بات یہ بھی ہے کہ آپ جب میٹھا نہیں کھاتے، تو پھر جب آپ کا دل میٹھا کھانے کو کرتا ہے۔ تو آپ حد سے زیادہ میٹھا کھا لیتے ہیں۔

:گھر پر بیٹھے رہنا

اگر آپ روزانہ سورج کی روشنی میں نہیں جاتے، تو آپ کے جسم پر اضافی چربی بہت زیادہ جمع ہو جاتی ہے۔ ایک ریسرچ کے مطابق جب ہم سورج کی روشنی میں جاتے ہیں، تو سورج کی روشنی ہمارے جسم کے خلیوں کے ذریعے ہماری چربی تک بھی پہنچ جاتی ہے۔ ایسا ہونے سے پھر ہماری چربی بھی کم ہونا شروع ہو جاتی ہے۔ اس لیے ماہرین کے مطابق روزانہ دن میں آدھے گھنٹے کے لیے باہر نکلیں۔ اور قدرتی روشنی کو اپنے اندر جذب کریں۔ ایسا کرنے سے آپ بہت سی بیماریوں سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔

وزن کم کرنے کے لیے متناسب غذا، روزانہ ورزش اور سوچا سمجھا منصوبہ آپ کو وزن کم کرنے میں مدد فراہم نہیں کر سکتا۔ وزن کم کرنے کے لیے روزانہ کی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھنی ہو گی۔ جن پر کوئی بھی غور نہیں کرتا۔ ہم آپ کو آج اس آرٹیکل میں 7 ایسی غلطیاں بتائیں گے۔ جو آپ روزانہ کرتے ہیں۔ لیکن ان سے آپ کا وزن کم نہیں ہوتا۔ اور سب سے بڑی بات یہ ہے، کہ اکثر آپ ان غلطیوں کو غلطی تصور نہیں کرتے۔

:دوپہر کا کھانا چھوڑنا

اکثر لوگ دوپہر کو کھانا نہیں کھاتے، ان کا کہنا ہوتا ہے۔ کہ وہ دوپہر کو ہلکی غذا کھاتے ہیں۔ لیکن بعض کا کہنا ہوتا ہے کہ وہ کام کی مصروفیت کی وجہ سے کھانا نہیں کھا سکے۔ لیکن یاد رکھیں جب آپ اپنے جسم کو خوراک سے محروم رکھتے ہیں، تو اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ آپنے جسم کو دباؤ کا شکار بنا رہے ہیں۔ اس سے آپ کے جسم کے نیورونز میں توازن برقرار نہیں رہتا۔ اور پھر آپ کے جسم کی چربی کم ہونے کا عمل بھی بہت سست ہو جاتا ہے۔ اور پھر جب آپ رات کا کھانا کھاتے ہیں، تو آپ کی بھوک بھی بڑھ جاتی ہے۔ اس لیے آپ پھر اپنی خوراک کے علاوہ دوسرے کھانوں کو بھی ترجیع دیتے ہیں۔

:جسم سے چپکی ہوئی جینز پہننا

اکثر لوگ ٹائٹ جینز اس لیے پہنتے ہیں، کہ وہ سمارٹ نظر آئیں۔ لیکن یہ عمل بار بار دہرانے سے آپ کو بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اسی ٹائٹ جینز پہننے کی وجہ سے آپ کی جلد دباؤ کا شکار ہوتی ہے۔ اور پھر آپ کے پٹھے بھی صحیع طریقے سے گردش نہیں کر پاتے۔ ایک لمبے عرصے تک پٹھے جب دباؤ میں رہتے ہیں تو پٹھے سست پڑ جاتے ہیں۔ اس لیے آپ کو چاہیئے کہ ایسی جینز کا انتخاب کریں، جو کہ ڈھیلی اور کھلی ہوں۔ چپکی ہوئی نہ ہوں۔

:بادام کے دودھ کا استعمال

جب آپ کو عام دودھ سے کوئی مسئلہ نہیں ہے، تو پھر بادام کے دودھ کا استعمال آپ کے لیے بہت خطرناک ہے۔ خاص طور پر اس وقت جب آپ وزن کم کرنے کی کوشش کر رہے ہوں۔ ایسے افراد جو ڈیری اشیا کا استعمال زیادہ کرتے ہیں۔ ان کے میٹابولزم بھی زیادہ اچھے طریقے سے کام کرتے ہیں۔ اور وہ شخص موٹاپے سے بھی بچے رہتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ عام دودھ میں کیلشیم پایا جاتا ہے۔ لیکن یہ سب اس وقت ممکن ہے، جب آپ دودھ کے ساتھ متوازن غذا کو بھی کھائیں۔

:کاربو ہائیڈریٹس اور صحت بخش چربی سے بچنا

اکثر لوگ وزن کم کرنے کے لیے غذائی کھانے کو ترجیع نہیں دیتے۔ لیکن ایسا کرنے سے آپ دل کی بیماری اور مدافعتی کمزوریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔ کھانے میں کاربوہائیڈریٹس اور صحت بخش چربی کو شامل نہ کرنے سے آپ کا غذائی توازن برقرار نہیں رہے گا۔ اور پھر آپ کے وزن میں بھی مزید اضافہ ہو گا۔

:روزانہ ورزش کرنا

روزانہ ورزش کرنے سے آپ کا جسم بہت حد تک فٹ رہتا ہے، اس سے آپ اپنے موٹاپے کو بھی کنٹرول میں رکھ سکتے ہیں۔تناؤ کی سطع کا کم کرنے کے لیے ورزش ایک حیرت انگیز طریقہ ہے۔ لیکن روزانہ ورزش کرنے کے فائدے بھی ہیں، لیکن نقصان بھی ہیں۔ روزانہ ورزش کرنے سے آپ کے جسم میں کولیسٹرول کی مقدار بڑھ جاتی ہے۔ اور پھر آپ کے جسم میں چربی بھی زیادہ ہو جاتی ہے۔ ماہرین کی ایک ریسرچ کے مطابق ورزش ہفتے میں 150 منٹ تک کرنی چاہیئے۔

:مصنوعی میٹھے سے پرہیز کرنا

مصنوعی میٹھے کو کم کرنے سے آپ کچھ کیلوریز کو کم کر سکتے ہیں، لیکن زیادہ عرصے تک اس کا استعمال نہ کرنے سے آپ مختلف اور سنگین بیماریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔ اور پھع ایسا کرنے سے آپ کا وزن بھی کم نہیں ہو گا۔ بلکہ آپ ذیابیطس اور موٹاپے جیسی خطرناک بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔ ایک بات یہ بھی ہے کہ آپ جب میٹھا نہیں کھاتے، تو پھر جب آپ کا دل میٹھا کھانے کو کرتا ہے۔ تو آپ حد سے زیادہ میٹھا کھا لیتے ہیں۔

:گھر پر بیٹھے رہنا

اگر آپ روزانہ سورج کی روشنی میں نہیں جاتے، تو آپ کے جسم پر اضافی چربی بہت زیادہ جمع ہو جاتی ہے۔ ایک ریسرچ کے مطابق جب ہم سورج کی روشنی میں جاتے ہیں، تو سورج کی روشنی ہمارے جسم کے خلیوں کے ذریعے ہماری چربی تک بھی پہنچ جاتی ہے۔ ایسا ہونے سے پھر ہماری چربی بھی کم ہونا شروع ہو جاتی ہے۔ اس لیے ماہرین کے مطابق روزانہ دن میں آدھے گھنٹے کے لیے باہر نکلیں۔ اور قدرتی روشنی کو اپنے اندر جذب کریں۔ ایسا کرنے سے آپ بہت سی بیماریوں سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔

وزن کم کرنے کے لیے متناسب غذا، روزانہ ورزش اور سوچا سمجھا منصوبہ آپ کو وزن کم کرنے میں مدد فراہم نہیں کر سکتا۔ وزن کم کرنے کے لیے روزانہ کی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھنی ہو گی۔ جن پر کوئی بھی غور نہیں کرتا۔ ہم آپ کو آج اس آرٹیکل میں 7 ایسی غلطیاں بتائیں گے۔ جو آپ روزانہ کرتے ہیں۔ لیکن ان سے آپ کا وزن کم نہیں ہوتا۔ اور سب سے بڑی بات یہ ہے، کہ اکثر آپ ان غلطیوں کو غلطی تصور نہیں کرتے۔

:دوپہر کا کھانا چھوڑنا

اکثر لوگ دوپہر کو کھانا نہیں کھاتے، ان کا کہنا ہوتا ہے۔ کہ وہ دوپہر کو ہلکی غذا کھاتے ہیں۔ لیکن بعض کا کہنا ہوتا ہے کہ وہ کام کی مصروفیت کی وجہ سے کھانا نہیں کھا سکے۔ لیکن یاد رکھیں جب آپ اپنے جسم کو خوراک سے محروم رکھتے ہیں، تو اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ آپنے جسم کو دباؤ کا شکار بنا رہے ہیں۔ اس سے آپ کے جسم کے نیورونز میں توازن برقرار نہیں رہتا۔ اور پھر آپ کے جسم کی چربی کم ہونے کا عمل بھی بہت سست ہو جاتا ہے۔ اور پھر جب آپ رات کا کھانا کھاتے ہیں، تو آپ کی بھوک بھی بڑھ جاتی ہے۔ اس لیے آپ پھر اپنی خوراک کے علاوہ دوسرے کھانوں کو بھی ترجیع دیتے ہیں۔

:جسم سے چپکی ہوئی جینز پہننا

اکثر لوگ ٹائٹ جینز اس لیے پہنتے ہیں، کہ وہ سمارٹ نظر آئیں۔ لیکن یہ عمل بار بار دہرانے سے آپ کو بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اسی ٹائٹ جینز پہننے کی وجہ سے آپ کی جلد دباؤ کا شکار ہوتی ہے۔ اور پھر آپ کے پٹھے بھی صحیع طریقے سے گردش نہیں کر پاتے۔ ایک لمبے عرصے تک پٹھے جب دباؤ میں رہتے ہیں تو پٹھے سست پڑ جاتے ہیں۔ اس لیے آپ کو چاہیئے کہ ایسی جینز کا انتخاب کریں، جو کہ ڈھیلی اور کھلی ہوں۔ چپکی ہوئی نہ ہوں۔

:بادام کے دودھ کا استعمال

جب آپ کو عام دودھ سے کوئی مسئلہ نہیں ہے، تو پھر بادام کے دودھ کا استعمال آپ کے لیے بہت خطرناک ہے۔ خاص طور پر اس وقت جب آپ وزن کم کرنے کی کوشش کر رہے ہوں۔ ایسے افراد جو ڈیری اشیا کا استعمال زیادہ کرتے ہیں۔ ان کے میٹابولزم بھی زیادہ اچھے طریقے سے کام کرتے ہیں۔ اور وہ شخص موٹاپے سے بھی بچے رہتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ عام دودھ میں کیلشیم پایا جاتا ہے۔ لیکن یہ سب اس وقت ممکن ہے، جب آپ دودھ کے ساتھ متوازن غذا کو بھی کھائیں۔

:کاربو ہائیڈریٹس اور صحت بخش چربی سے بچنا

اکثر لوگ وزن کم کرنے کے لیے غذائی کھانے کو ترجیع نہیں دیتے۔ لیکن ایسا کرنے سے آپ دل کی بیماری اور مدافعتی کمزوریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔ کھانے میں کاربوہائیڈریٹس اور صحت بخش چربی کو شامل نہ کرنے سے آپ کا غذائی توازن برقرار نہیں رہے گا۔ اور پھر آپ کے وزن میں بھی مزید اضافہ ہو گا۔

:روزانہ ورزش کرنا

روزانہ ورزش کرنے سے آپ کا جسم بہت حد تک فٹ رہتا ہے، اس سے آپ اپنے موٹاپے کو بھی کنٹرول میں رکھ سکتے ہیں۔تناؤ کی سطع کا کم کرنے کے لیے ورزش ایک حیرت انگیز طریقہ ہے۔ لیکن روزانہ ورزش کرنے کے فائدے بھی ہیں، لیکن نقصان بھی ہیں۔ روزانہ ورزش کرنے سے آپ کے جسم میں کولیسٹرول کی مقدار بڑھ جاتی ہے۔ اور پھر آپ کے جسم میں چربی بھی زیادہ ہو جاتی ہے۔ ماہرین کی ایک ریسرچ کے مطابق ورزش ہفتے میں 150 منٹ تک کرنی چاہیئے۔

:مصنوعی میٹھے سے پرہیز کرنا

مصنوعی میٹھے کو کم کرنے سے آپ کچھ کیلوریز کو کم کر سکتے ہیں، لیکن زیادہ عرصے تک اس کا استعمال نہ کرنے سے آپ مختلف اور سنگین بیماریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔ اور پھع ایسا کرنے سے آپ کا وزن بھی کم نہیں ہو گا۔ بلکہ آپ ذیابیطس اور موٹاپے جیسی خطرناک بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔ ایک بات یہ بھی ہے کہ آپ جب میٹھا نہیں کھاتے، تو پھر جب آپ کا دل میٹھا کھانے کو کرتا ہے۔ تو آپ حد سے زیادہ میٹھا کھا لیتے ہیں۔

:گھر پر بیٹھے رہنا

اگر آپ روزانہ سورج کی روشنی میں نہیں جاتے، تو آپ کے جسم پر اضافی چربی بہت زیادہ جمع ہو جاتی ہے۔ ایک ریسرچ کے مطابق جب ہم سورج کی روشنی میں جاتے ہیں، تو سورج کی روشنی ہمارے جسم کے خلیوں کے ذریعے ہماری چربی تک بھی پہنچ جاتی ہے۔ ایسا ہونے سے پھر ہماری چربی بھی کم ہونا شروع ہو جاتی ہے۔ اس لیے ماہرین کے مطابق روزانہ دن میں آدھے گھنٹے کے لیے باہر نکلیں۔ اور قدرتی روشنی کو اپنے اندر جذب کریں۔ ایسا کرنے سے آپ بہت سی بیماریوں سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles