25 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

اگر حاملہ خواتین کو کووڈ ہوجائے توکیا کریں؟چند احتیاطی تدابیر جو ہر ماں کے لئے ضروری

عام طور پر خیال کیا جاتا ہے کہ اگر حاملہ خاتون کووڈ 19 کا شکار ہوگئی ہے تو لازمی اس کا بچہ بھی پیدائشی طور پر اس وائرس کا شکار ہوگیا ہوگا۔  جبکہ مختلق تحقیقات کی روشنی میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ابھی تک حاملہ خاتون سے بچے میں وائرس منتقل ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا ۔

 ڈاکٹر شائستہ لودھی میڈیکل سینٹر کی ماہرِ زچہ وبچہ اور ڈاکٹر عروج ناز اس بارے میں مزید بیان کرتے ہوئے کہتی ہیں کہ اگرخاتون کوحمل کے شروع میں کورونا ہو جائے تو بچے کے متاثر ہونے کے نقصانات بہت کم ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ بچے کی نشونما پر کوئی فرق نہیں پڑے گا اور نہ ہی اس کی صحت متاثر ہوگی لیکن اگر حمل کے آخری مہینوں میں یا پھر بچے کی پیدائش کے بعد کورونا وائرس سے متاثر ہوئی ہے تو ماں کو بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔ ان ڈاکٹروں کی بتائی ہوئ احتیاط درجِ ذیل ہیں


وہ احتیاطی تدابیر جو کورونا سے بچنے کے لئے تمام حاملہ خواتین کو استعمال میں لانی چاہئیے

بار بار ہاتھ صابن سے ہاتھ دھوئیں

لوگوں سے مناسب سماجی فاصلہ اختیار کریں

 متوازن خوراک کا انتخاب کریں

 ڈاکٹر کے مشورے کے مطابق فولک ایسڈ، وٹامن ڈی اور ملٹی وٹامن دوائیں ضرور استعمال کریں

الٹراساؤنڈ اور ماہانہ ٹیسٹ لازمی کروائیں اور ساتھ ہی ساتھ کووڈ ایس او پیز کا بھی خیال رکھیں۔

ہینڈ سینیٹائزرز اور فیس ماسک کا استعمال کریں

 بلا ضرورت گھر سے باہر نہ جائیں

کھانسی ، بخار اور نزلے کی صورت میں ڈاکٹر سے فوری رجوع کریں، اسے نظر انداز مت کریں

 ڈاکٹر جو بھی ٹیسٹ تجویز کریں وہ فوری کروالیں

حمل کے دوران کورونا سے دوچار ہونےوالی خواتین کویہ تراکیب استعمال کرنی چاہیے

اپنے آپ کو لوگوں سے الگ کریں اور ملنے جلنے سے گریز کریں

 پانی زیادہ سے زیادہ استعمال کریں

عام طور پر خیال کیا جاتا ہے کہ اگر حاملہ خاتون کووڈ 19 کا شکار ہوگئی ہے تو لازمی اس کا بچہ بھی پیدائشی طور پر اس وائرس کا شکار ہوگیا ہوگا۔  جبکہ مختلق تحقیقات کی روشنی میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ابھی تک حاملہ خاتون سے بچے میں وائرس منتقل ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا ۔

 ڈاکٹر شائستہ لودھی میڈیکل سینٹر کی ماہرِ زچہ وبچہ اور ڈاکٹر عروج ناز اس بارے میں مزید بیان کرتے ہوئے کہتی ہیں کہ اگرخاتون کوحمل کے شروع میں کورونا ہو جائے تو بچے کے متاثر ہونے کے نقصانات بہت کم ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ بچے کی نشونما پر کوئی فرق نہیں پڑے گا اور نہ ہی اس کی صحت متاثر ہوگی لیکن اگر حمل کے آخری مہینوں میں یا پھر بچے کی پیدائش کے بعد کورونا وائرس سے متاثر ہوئی ہے تو ماں کو بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔ ان ڈاکٹروں کی بتائی ہوئ احتیاط درجِ ذیل ہیں


وہ احتیاطی تدابیر جو کورونا سے بچنے کے لئے تمام حاملہ خواتین کو استعمال میں لانی چاہئیے

بار بار ہاتھ صابن سے ہاتھ دھوئیں

لوگوں سے مناسب سماجی فاصلہ اختیار کریں

 متوازن خوراک کا انتخاب کریں

 ڈاکٹر کے مشورے کے مطابق فولک ایسڈ، وٹامن ڈی اور ملٹی وٹامن دوائیں ضرور استعمال کریں

الٹراساؤنڈ اور ماہانہ ٹیسٹ لازمی کروائیں اور ساتھ ہی ساتھ کووڈ ایس او پیز کا بھی خیال رکھیں۔

ہینڈ سینیٹائزرز اور فیس ماسک کا استعمال کریں

 بلا ضرورت گھر سے باہر نہ جائیں

کھانسی ، بخار اور نزلے کی صورت میں ڈاکٹر سے فوری رجوع کریں، اسے نظر انداز مت کریں

 ڈاکٹر جو بھی ٹیسٹ تجویز کریں وہ فوری کروالیں

حمل کے دوران کورونا سے دوچار ہونےوالی خواتین کویہ تراکیب استعمال کرنی چاہیے

اپنے آپ کو لوگوں سے الگ کریں اور ملنے جلنے سے گریز کریں

 پانی زیادہ سے زیادہ استعمال کریں

عام طور پر خیال کیا جاتا ہے کہ اگر حاملہ خاتون کووڈ 19 کا شکار ہوگئی ہے تو لازمی اس کا بچہ بھی پیدائشی طور پر اس وائرس کا شکار ہوگیا ہوگا۔  جبکہ مختلق تحقیقات کی روشنی میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ابھی تک حاملہ خاتون سے بچے میں وائرس منتقل ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا ۔

 ڈاکٹر شائستہ لودھی میڈیکل سینٹر کی ماہرِ زچہ وبچہ اور ڈاکٹر عروج ناز اس بارے میں مزید بیان کرتے ہوئے کہتی ہیں کہ اگرخاتون کوحمل کے شروع میں کورونا ہو جائے تو بچے کے متاثر ہونے کے نقصانات بہت کم ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ بچے کی نشونما پر کوئی فرق نہیں پڑے گا اور نہ ہی اس کی صحت متاثر ہوگی لیکن اگر حمل کے آخری مہینوں میں یا پھر بچے کی پیدائش کے بعد کورونا وائرس سے متاثر ہوئی ہے تو ماں کو بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔ ان ڈاکٹروں کی بتائی ہوئ احتیاط درجِ ذیل ہیں


وہ احتیاطی تدابیر جو کورونا سے بچنے کے لئے تمام حاملہ خواتین کو استعمال میں لانی چاہئیے

بار بار ہاتھ صابن سے ہاتھ دھوئیں

لوگوں سے مناسب سماجی فاصلہ اختیار کریں

 متوازن خوراک کا انتخاب کریں

 ڈاکٹر کے مشورے کے مطابق فولک ایسڈ، وٹامن ڈی اور ملٹی وٹامن دوائیں ضرور استعمال کریں

الٹراساؤنڈ اور ماہانہ ٹیسٹ لازمی کروائیں اور ساتھ ہی ساتھ کووڈ ایس او پیز کا بھی خیال رکھیں۔

ہینڈ سینیٹائزرز اور فیس ماسک کا استعمال کریں

 بلا ضرورت گھر سے باہر نہ جائیں

کھانسی ، بخار اور نزلے کی صورت میں ڈاکٹر سے فوری رجوع کریں، اسے نظر انداز مت کریں

 ڈاکٹر جو بھی ٹیسٹ تجویز کریں وہ فوری کروالیں

حمل کے دوران کورونا سے دوچار ہونےوالی خواتین کویہ تراکیب استعمال کرنی چاہیے

اپنے آپ کو لوگوں سے الگ کریں اور ملنے جلنے سے گریز کریں

 پانی زیادہ سے زیادہ استعمال کریں

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles