25 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

کرونا ویکسینیشن لگوانے کے فائدے ہیں یا نقصان؟ جانیئے مکمل تفصیل

:کوویڈ 19 ویکسینیشن محفوظ ہے

کرونا ویکسین سائنس کا استعمال کرتے ہوئے تیار کی گئی تھی جو عشروں سے جاری ہے۔
کرونا ویکسین تجرباتی نہیں ہیں۔ وہ کلینیکل ٹرائلز کے تمام مطلوبہ مراحل سے گزرے۔ وسیع پیمانے پر جانچ اورنگرانی سے ثابت ہوا ہے کہ یہ ویکسین محفوظ اور موثر ہیں۔
کرونا کی ویکسینیں موصول ہوچکی ہیں اور ان کی امریکی تاریخ میں انتہائی نگہداشت نگرانی جاری ہے۔

:کرونا کی ویکسینیشن موثر ہے

کوویڈ 19 ویکسین آپ کے لیے موثر ہے۔ وہ آپ کو وائرس کو پھیلنے اور پھیلانے سے روک سکتی ہے۔ جس کی وجہ سے کرونا ہوتا ہے۔
کوویڈ 19 ویکسینیں آپ کو سنگین بیمار ہونے سے بچانے میں بھی مدد دیتی ہیں۔ چاہے آپ کرونا کا شکار ہو بھی جائیں۔
خود کو ویکسینیٹ کروانے سے آپ خود تو بچتے ہیں، ساتھ ہی اپنے آس پاس کے رہنے والوں کی حفاظت بھی کرتے ہیں۔

:ویکسینیشن لگوانے کے بعد، آپ مزید کام کر سکتے ہیں

کرونا کی ویکسینیشن لگوانے کے بعد آپ مختلف سرگرمیوں کا آغاز بھی کر سکتے ہیں، جو کہ آپ وبا کا شکارہونے سے پہلے کرتے تھے۔ آپ ماسک لگا کر 6 فٹ دور نہ بھی رہیں، تو بھی اپنا کام جاری رکھ سکتے ہیں۔ لیکن جس جگہ پر کرونا کے ایس او پیز پر عمل بلکل بھی نہیں ہورہا۔ اس جگہ پر جانے سے گریز کریں۔
آپ کو اپنے اور دوسروں کی حفاظت کے لیے دستیاب تمام ٹولز کا استعمال جاری رکھنا چاہئے۔ جب تک کہ آپ کو مکمل طور پر ویکسین نہیں لگ جاتی ہے۔

:کرونا سے بچنے کے لیے ویکسینیشن بہت مددگار ہے

یہ بات بلکل بھی ٹھیک نہیں کہ کرونا تو پہلے تھا، اب ٹیکہ لگوانے کا کوئی فائدہ نہیں۔ جب پولیو کے ٹیکے لگائیں جاتے ہیں، تو ساتھ ہی گھر پر قطرے پلانے والے بھی آتے ہیں۔ وہ اس لیے کہ قطرے بھی پولیو سے بچنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ اس لیے اگر آپ کرونا کی وبا میں پہلے مبتلا ہوئے تھے اور اب صحت مند ہیں۔ تو پھر بھی ویکسینیشن ضرور لگوائیں۔

کرونا ابھی بھی ان لوگوں کے لیے بہت خطرناک ہے، جنہوں نے کرونا کی ویکسینیشن نہیں لگوائی۔ جو لوگ اس کا شکار ہو جاتے ہیں، ان کی حالت بہت ناساز ہو جاتی ہے۔ ہو سکتا ہے وہ اسپتال میں داخل کر لیے جائیں۔ اور پھر اس وبا سے نکلنے میں کئی ہفتے لگ جاتے ہیں۔ اسی لیے کرونا کے ٹیکے لگوائیں، تاکہ آپ اس خطرناک اور جان لیوا صورتحال سے بچ سکیں۔

:کرونا ویکسینیشن کے بعد استثنیٰ

کرونا کی ویکسینیشن کے بارے میں ابھی بہت کچھ ہے، جو ہم سیکھ رہے ہیں۔ اور سی ڈی سی مستقل طور پر ان شواہد کا جائزہ لے رہا ہے، اور ہدایت نامہ کو اپ ڈیٹ کررہا ہے۔ ہم نہیں جانتے کہ حفاظتی ٹیکے لگوانے کے بعد آپ کتنی دیر تک محفوظ رہیں گے۔
ہم اس بات سے واقف نہیں ہیں، کہ کرونا کی وجہ سے کتنی سنگین موتیں ہو چکی ہیں۔
جب آپ کرونا کا شکار ہو جاتے ہیں، تو آپ اس وبا کو اپنے پیاروں تک بھی پہنچا دیتے ہیں۔ جس کی وجہ سے انہیں بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس لیے ویکسینیشن لگوانا بہت فائدہ مند ہے۔

:کرونا کی ویکسینیشن آپ کو کرونا میں مبتلا نہیں کرے گی

کرونا کی کسی بھی ویکسینیشن میں ایسا کوئی وائرس نہیں ہوتا، جس کی وجہ سے آپ کرونا کا شکار ہوں۔ اس لیے ویکسینیشن آپ کو کرونا سے بچائے ہی گی، مزید کرونا میں مبتلا نہیں کرے گی۔

۔

:کوویڈ 19 ویکسینیشن محفوظ ہے

کرونا ویکسین سائنس کا استعمال کرتے ہوئے تیار کی گئی تھی جو عشروں سے جاری ہے۔
کرونا ویکسین تجرباتی نہیں ہیں۔ وہ کلینیکل ٹرائلز کے تمام مطلوبہ مراحل سے گزرے۔ وسیع پیمانے پر جانچ اورنگرانی سے ثابت ہوا ہے کہ یہ ویکسین محفوظ اور موثر ہیں۔
کرونا کی ویکسینیں موصول ہوچکی ہیں اور ان کی امریکی تاریخ میں انتہائی نگہداشت نگرانی جاری ہے۔

:کرونا کی ویکسینیشن موثر ہے

کوویڈ 19 ویکسین آپ کے لیے موثر ہے۔ وہ آپ کو وائرس کو پھیلنے اور پھیلانے سے روک سکتی ہے۔ جس کی وجہ سے کرونا ہوتا ہے۔
کوویڈ 19 ویکسینیں آپ کو سنگین بیمار ہونے سے بچانے میں بھی مدد دیتی ہیں۔ چاہے آپ کرونا کا شکار ہو بھی جائیں۔
خود کو ویکسینیٹ کروانے سے آپ خود تو بچتے ہیں، ساتھ ہی اپنے آس پاس کے رہنے والوں کی حفاظت بھی کرتے ہیں۔

:ویکسینیشن لگوانے کے بعد، آپ مزید کام کر سکتے ہیں

کرونا کی ویکسینیشن لگوانے کے بعد آپ مختلف سرگرمیوں کا آغاز بھی کر سکتے ہیں، جو کہ آپ وبا کا شکارہونے سے پہلے کرتے تھے۔ آپ ماسک لگا کر 6 فٹ دور نہ بھی رہیں، تو بھی اپنا کام جاری رکھ سکتے ہیں۔ لیکن جس جگہ پر کرونا کے ایس او پیز پر عمل بلکل بھی نہیں ہورہا۔ اس جگہ پر جانے سے گریز کریں۔
آپ کو اپنے اور دوسروں کی حفاظت کے لیے دستیاب تمام ٹولز کا استعمال جاری رکھنا چاہئے۔ جب تک کہ آپ کو مکمل طور پر ویکسین نہیں لگ جاتی ہے۔

:کرونا سے بچنے کے لیے ویکسینیشن بہت مددگار ہے

یہ بات بلکل بھی ٹھیک نہیں کہ کرونا تو پہلے تھا، اب ٹیکہ لگوانے کا کوئی فائدہ نہیں۔ جب پولیو کے ٹیکے لگائیں جاتے ہیں، تو ساتھ ہی گھر پر قطرے پلانے والے بھی آتے ہیں۔ وہ اس لیے کہ قطرے بھی پولیو سے بچنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ اس لیے اگر آپ کرونا کی وبا میں پہلے مبتلا ہوئے تھے اور اب صحت مند ہیں۔ تو پھر بھی ویکسینیشن ضرور لگوائیں۔

کرونا ابھی بھی ان لوگوں کے لیے بہت خطرناک ہے، جنہوں نے کرونا کی ویکسینیشن نہیں لگوائی۔ جو لوگ اس کا شکار ہو جاتے ہیں، ان کی حالت بہت ناساز ہو جاتی ہے۔ ہو سکتا ہے وہ اسپتال میں داخل کر لیے جائیں۔ اور پھر اس وبا سے نکلنے میں کئی ہفتے لگ جاتے ہیں۔ اسی لیے کرونا کے ٹیکے لگوائیں، تاکہ آپ اس خطرناک اور جان لیوا صورتحال سے بچ سکیں۔

:کرونا ویکسینیشن کے بعد استثنیٰ

کرونا کی ویکسینیشن کے بارے میں ابھی بہت کچھ ہے، جو ہم سیکھ رہے ہیں۔ اور سی ڈی سی مستقل طور پر ان شواہد کا جائزہ لے رہا ہے، اور ہدایت نامہ کو اپ ڈیٹ کررہا ہے۔ ہم نہیں جانتے کہ حفاظتی ٹیکے لگوانے کے بعد آپ کتنی دیر تک محفوظ رہیں گے۔
ہم اس بات سے واقف نہیں ہیں، کہ کرونا کی وجہ سے کتنی سنگین موتیں ہو چکی ہیں۔
جب آپ کرونا کا شکار ہو جاتے ہیں، تو آپ اس وبا کو اپنے پیاروں تک بھی پہنچا دیتے ہیں۔ جس کی وجہ سے انہیں بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس لیے ویکسینیشن لگوانا بہت فائدہ مند ہے۔

:کرونا کی ویکسینیشن آپ کو کرونا میں مبتلا نہیں کرے گی

کرونا کی کسی بھی ویکسینیشن میں ایسا کوئی وائرس نہیں ہوتا، جس کی وجہ سے آپ کرونا کا شکار ہوں۔ اس لیے ویکسینیشن آپ کو کرونا سے بچائے ہی گی، مزید کرونا میں مبتلا نہیں کرے گی۔

۔

:کوویڈ 19 ویکسینیشن محفوظ ہے

کرونا ویکسین سائنس کا استعمال کرتے ہوئے تیار کی گئی تھی جو عشروں سے جاری ہے۔
کرونا ویکسین تجرباتی نہیں ہیں۔ وہ کلینیکل ٹرائلز کے تمام مطلوبہ مراحل سے گزرے۔ وسیع پیمانے پر جانچ اورنگرانی سے ثابت ہوا ہے کہ یہ ویکسین محفوظ اور موثر ہیں۔
کرونا کی ویکسینیں موصول ہوچکی ہیں اور ان کی امریکی تاریخ میں انتہائی نگہداشت نگرانی جاری ہے۔

:کرونا کی ویکسینیشن موثر ہے

کوویڈ 19 ویکسین آپ کے لیے موثر ہے۔ وہ آپ کو وائرس کو پھیلنے اور پھیلانے سے روک سکتی ہے۔ جس کی وجہ سے کرونا ہوتا ہے۔
کوویڈ 19 ویکسینیں آپ کو سنگین بیمار ہونے سے بچانے میں بھی مدد دیتی ہیں۔ چاہے آپ کرونا کا شکار ہو بھی جائیں۔
خود کو ویکسینیٹ کروانے سے آپ خود تو بچتے ہیں، ساتھ ہی اپنے آس پاس کے رہنے والوں کی حفاظت بھی کرتے ہیں۔

:ویکسینیشن لگوانے کے بعد، آپ مزید کام کر سکتے ہیں

کرونا کی ویکسینیشن لگوانے کے بعد آپ مختلف سرگرمیوں کا آغاز بھی کر سکتے ہیں، جو کہ آپ وبا کا شکارہونے سے پہلے کرتے تھے۔ آپ ماسک لگا کر 6 فٹ دور نہ بھی رہیں، تو بھی اپنا کام جاری رکھ سکتے ہیں۔ لیکن جس جگہ پر کرونا کے ایس او پیز پر عمل بلکل بھی نہیں ہورہا۔ اس جگہ پر جانے سے گریز کریں۔
آپ کو اپنے اور دوسروں کی حفاظت کے لیے دستیاب تمام ٹولز کا استعمال جاری رکھنا چاہئے۔ جب تک کہ آپ کو مکمل طور پر ویکسین نہیں لگ جاتی ہے۔

:کرونا سے بچنے کے لیے ویکسینیشن بہت مددگار ہے

یہ بات بلکل بھی ٹھیک نہیں کہ کرونا تو پہلے تھا، اب ٹیکہ لگوانے کا کوئی فائدہ نہیں۔ جب پولیو کے ٹیکے لگائیں جاتے ہیں، تو ساتھ ہی گھر پر قطرے پلانے والے بھی آتے ہیں۔ وہ اس لیے کہ قطرے بھی پولیو سے بچنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ اس لیے اگر آپ کرونا کی وبا میں پہلے مبتلا ہوئے تھے اور اب صحت مند ہیں۔ تو پھر بھی ویکسینیشن ضرور لگوائیں۔

کرونا ابھی بھی ان لوگوں کے لیے بہت خطرناک ہے، جنہوں نے کرونا کی ویکسینیشن نہیں لگوائی۔ جو لوگ اس کا شکار ہو جاتے ہیں، ان کی حالت بہت ناساز ہو جاتی ہے۔ ہو سکتا ہے وہ اسپتال میں داخل کر لیے جائیں۔ اور پھر اس وبا سے نکلنے میں کئی ہفتے لگ جاتے ہیں۔ اسی لیے کرونا کے ٹیکے لگوائیں، تاکہ آپ اس خطرناک اور جان لیوا صورتحال سے بچ سکیں۔

:کرونا ویکسینیشن کے بعد استثنیٰ

کرونا کی ویکسینیشن کے بارے میں ابھی بہت کچھ ہے، جو ہم سیکھ رہے ہیں۔ اور سی ڈی سی مستقل طور پر ان شواہد کا جائزہ لے رہا ہے، اور ہدایت نامہ کو اپ ڈیٹ کررہا ہے۔ ہم نہیں جانتے کہ حفاظتی ٹیکے لگوانے کے بعد آپ کتنی دیر تک محفوظ رہیں گے۔
ہم اس بات سے واقف نہیں ہیں، کہ کرونا کی وجہ سے کتنی سنگین موتیں ہو چکی ہیں۔
جب آپ کرونا کا شکار ہو جاتے ہیں، تو آپ اس وبا کو اپنے پیاروں تک بھی پہنچا دیتے ہیں۔ جس کی وجہ سے انہیں بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس لیے ویکسینیشن لگوانا بہت فائدہ مند ہے۔

:کرونا کی ویکسینیشن آپ کو کرونا میں مبتلا نہیں کرے گی

کرونا کی کسی بھی ویکسینیشن میں ایسا کوئی وائرس نہیں ہوتا، جس کی وجہ سے آپ کرونا کا شکار ہوں۔ اس لیے ویکسینیشن آپ کو کرونا سے بچائے ہی گی، مزید کرونا میں مبتلا نہیں کرے گی۔

۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,984FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles