30 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

کورونا وائرس ہرماہ تبدیل ہو رہا، ویکسین کس حد تک مفید ہوگی کچھ پتا نہیں۔

 کراچی یونیورسٹی کے بین الاقومی مرکز برائے کیمیائی حیاتیاتی علوم کے سربراہ اور کیمیادان ڈاکٹر اقبال چودھری کے مطابق کوروناوائرس میں وائرس میں 30 ہزار مالیکیول ہیں جوانسانی خلیوں سے ملکر انفیکشن بڑھاتے ہیں- ان مالیکیولز میں اب تک122 تبدیلیاں ۔ہوچکی ہیں لہذایہ کہنا قبل از وقت ہو گا کی ویکسین کس حد تک مفید ہوگی۔

انہوں نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وائرس میں 32 تبدیلیوں کا اثر ووہان کے وائرس سے مختلف ہے۔ خطرناک وائرس مستقل تبدیل ہورہا ہے، وائرس میں 30 ہزار مالیکیول ہیں جو فٹ بال کی طرح ارینج ہیں۔یہ مالیکیول انسانی خلیوں سے ملکر انفیکشن بڑھاتے ہیں۔ وائرس کی اشکال بدلنے کے ساتھ ویکسین کتنی مفید ثابت ہوگی اس کے بارے میں کچح بھی کہا نہیں جا سکتا۔

مزید برآں وزیرسندھ عذرا پلیجو نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ابھی تک ہمیں کوئی اندازہ نہیں کہ ویکسین کتنی اور کس ٹائم فریم میں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ بہت مشکل مرحلہ ہے کیونکہ 70سے 80 فیصد لوگوں کو ویکسین لگانی ہے، ویکسین کی خریداری کیلئے چین سے بات ہوئی ہے لیکن حصول وفاق کا کام ہے، بطور صوبہ ہم چین سے براہ راست ویکسین نہیں لے سکتے، صوبوں کو براہ راست کورونا ویکسین لینے کی اجازت دی جائے، چین کی ویکسین کے کراچی یونیورسٹی، انڈس یونیورسٹی اور آغا خان ہسپتال میں ٹرائل ہوئے ہیں۔

اس وقت ملک میں ویکسی نیشن بہت ضروری ہے، بیرون ممالک میں ویکسی نیشن شروع ہوچکی ہے، لگتا ہے ہم آخری ملک ہوں گے جن کے پاس ویکسین آئے گی، ہم چاہتے ہیں ہم جلد ازجلد ویکسی نیشن شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین لوگوں کو مفت دینے کی کوشش کریں گے۔ ویکسین پہلے فرنٹ لائن ورکرز کو لگائی جائے گی۔

 کراچی یونیورسٹی کے بین الاقومی مرکز برائے کیمیائی حیاتیاتی علوم کے سربراہ اور کیمیادان ڈاکٹر اقبال چودھری کے مطابق کوروناوائرس میں وائرس میں 30 ہزار مالیکیول ہیں جوانسانی خلیوں سے ملکر انفیکشن بڑھاتے ہیں- ان مالیکیولز میں اب تک122 تبدیلیاں ۔ہوچکی ہیں لہذایہ کہنا قبل از وقت ہو گا کی ویکسین کس حد تک مفید ہوگی۔

انہوں نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وائرس میں 32 تبدیلیوں کا اثر ووہان کے وائرس سے مختلف ہے۔ خطرناک وائرس مستقل تبدیل ہورہا ہے، وائرس میں 30 ہزار مالیکیول ہیں جو فٹ بال کی طرح ارینج ہیں۔یہ مالیکیول انسانی خلیوں سے ملکر انفیکشن بڑھاتے ہیں۔ وائرس کی اشکال بدلنے کے ساتھ ویکسین کتنی مفید ثابت ہوگی اس کے بارے میں کچح بھی کہا نہیں جا سکتا۔

مزید برآں وزیرسندھ عذرا پلیجو نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ابھی تک ہمیں کوئی اندازہ نہیں کہ ویکسین کتنی اور کس ٹائم فریم میں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ بہت مشکل مرحلہ ہے کیونکہ 70سے 80 فیصد لوگوں کو ویکسین لگانی ہے، ویکسین کی خریداری کیلئے چین سے بات ہوئی ہے لیکن حصول وفاق کا کام ہے، بطور صوبہ ہم چین سے براہ راست ویکسین نہیں لے سکتے، صوبوں کو براہ راست کورونا ویکسین لینے کی اجازت دی جائے، چین کی ویکسین کے کراچی یونیورسٹی، انڈس یونیورسٹی اور آغا خان ہسپتال میں ٹرائل ہوئے ہیں۔

اس وقت ملک میں ویکسی نیشن بہت ضروری ہے، بیرون ممالک میں ویکسی نیشن شروع ہوچکی ہے، لگتا ہے ہم آخری ملک ہوں گے جن کے پاس ویکسین آئے گی، ہم چاہتے ہیں ہم جلد ازجلد ویکسی نیشن شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین لوگوں کو مفت دینے کی کوشش کریں گے۔ ویکسین پہلے فرنٹ لائن ورکرز کو لگائی جائے گی۔

 کراچی یونیورسٹی کے بین الاقومی مرکز برائے کیمیائی حیاتیاتی علوم کے سربراہ اور کیمیادان ڈاکٹر اقبال چودھری کے مطابق کوروناوائرس میں وائرس میں 30 ہزار مالیکیول ہیں جوانسانی خلیوں سے ملکر انفیکشن بڑھاتے ہیں- ان مالیکیولز میں اب تک122 تبدیلیاں ۔ہوچکی ہیں لہذایہ کہنا قبل از وقت ہو گا کی ویکسین کس حد تک مفید ہوگی۔

انہوں نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وائرس میں 32 تبدیلیوں کا اثر ووہان کے وائرس سے مختلف ہے۔ خطرناک وائرس مستقل تبدیل ہورہا ہے، وائرس میں 30 ہزار مالیکیول ہیں جو فٹ بال کی طرح ارینج ہیں۔یہ مالیکیول انسانی خلیوں سے ملکر انفیکشن بڑھاتے ہیں۔ وائرس کی اشکال بدلنے کے ساتھ ویکسین کتنی مفید ثابت ہوگی اس کے بارے میں کچح بھی کہا نہیں جا سکتا۔

مزید برآں وزیرسندھ عذرا پلیجو نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ابھی تک ہمیں کوئی اندازہ نہیں کہ ویکسین کتنی اور کس ٹائم فریم میں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ بہت مشکل مرحلہ ہے کیونکہ 70سے 80 فیصد لوگوں کو ویکسین لگانی ہے، ویکسین کی خریداری کیلئے چین سے بات ہوئی ہے لیکن حصول وفاق کا کام ہے، بطور صوبہ ہم چین سے براہ راست ویکسین نہیں لے سکتے، صوبوں کو براہ راست کورونا ویکسین لینے کی اجازت دی جائے، چین کی ویکسین کے کراچی یونیورسٹی، انڈس یونیورسٹی اور آغا خان ہسپتال میں ٹرائل ہوئے ہیں۔

اس وقت ملک میں ویکسی نیشن بہت ضروری ہے، بیرون ممالک میں ویکسی نیشن شروع ہوچکی ہے، لگتا ہے ہم آخری ملک ہوں گے جن کے پاس ویکسین آئے گی، ہم چاہتے ہیں ہم جلد ازجلد ویکسی نیشن شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین لوگوں کو مفت دینے کی کوشش کریں گے۔ ویکسین پہلے فرنٹ لائن ورکرز کو لگائی جائے گی۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,986FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles