30 C
Lahore
Tuesday, October 19, 2021

کیا آپ چین سے آئی کورونا ویکسین لگوانے کے لئے تیار ہیں؟ نقصانات کے کیا خدشات؟

ہمسایہ ملک چین کی طرف سے بطورِ تحفہ بھیجی جانے والی پانچ لاکھ ویکسین کٹس کے بعد کل وزیرِاعظم نے چند روز قبل پورے ملک میں کورونا ویکسینیشن مہم کا افتتاح کردیا تھا البتہ تمام صوبوں میں اس مہم کا آغاز اب ہوا ہے۔

اس انسدادی مہم کے مطابق ملک بھر کے تمام صوبوں میں کورونا ویکسین سب سے پہلے فرنٹ لائن ورکرز کو مہیا کی جائیں گی ۔ فرنٹ لائن ورکرز سے مراد وہ تمام افراد ہیں جن کا تعلق شعبہ صحت سے ہے کیونکہ ان کا واسطہ براہِ راست کورونا کے مریضوں سے پڑتا ہے انھیں ہی کورونا سے متاثر ہونے کا خطرہ سب سے زیادہ ہے اور اسی لیے وہی اس ویکسین کے سب سے زیادہ حقدار ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ عوام میں کورونا ویکسینز کے لئے بہت سے تخفظات پائے جاتے ہیں ۔ ہر بار نئی چیز کی طرح اس ویکسین کےحوالے سے بھی بہت سی افواہیں اڑتی رہتی ہیں مثال کے طور پر کسی کا کہنا ہے کہ اس ویکسین کے زریعے دنیا کی آبادی کم کرنے کا منصوبہ ہے تو کوئی کہتا ہے اس کے پیچھے بل گیٹس کی انسان دشمن پالیسییاں کارفرما ہیں۔

اور سب سے خطرناک افواہ تو یہ ہے کہ اس ویکسین میں سور اور دیگر حرام جانوروں کی چربی شامل کی گئی ہے جسے لگانے سے مسلمان اپنا ایمان کھو دیں گے۔

البتہ ان تمام افواہوں کا حقیقت سے کوئی لینا دینا نہیں۔ کورونا کی ویکسین دنیا بھر کے ماہرین کی انتہائی نگہداشت میں بنائی گئی ویکسین ہے جسے متعدد بار مختلف جانوروں اور انسانوں پر ٹیسٹ کیا جاچکا ہے۔ اور توجہ طلب بات تو یہ کہ اب تو یہ ویکسینز دنیا بھر میں بہت سے ممالک میں لگائی جا چکی ہیں اس لئے عوام کو مشورہ کہ آپ بے فکر ہو کر کورونا ویکسینز لگوائیں اور افواہوں پر کان نہ دھریں۔

صوبہ سندھ میں فرنٹ لائن ورکرز کو کورونا ویکسینز لگانے کا عمل کراچی کے اوجھا اسپتال میں ہوگا جس کا افتتاح سندھ کے وزیرِ اعلی سید مراد علی شاہ کریں گے۔ اسی طرح صوبہ بلوچستان میں پانچ ہزار کورونا ویکسینز لگانے کا افتتاح وزیرِاعلی جام کمال خان کریں گے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کی یہ تمام ویکسینز فرنٹ لائن ورکرز کو حکومت کی جانب سے مفت لگائی جارہی ہیں اوروزیرِ اعظم نے اس عمل میں شفافیت کی یقین دہانی کروائی ہے۔

امید ہے عوام ویکسین کے حوالے سے حکومت کے ساتھ تعاون کریں گے جس سے وقت کے ساتھ ساتھ اس موذی وائرس پر قابو پانا ممکن ہوسکے گا۔

ہمسایہ ملک چین کی طرف سے بطورِ تحفہ بھیجی جانے والی پانچ لاکھ ویکسین کٹس کے بعد کل وزیرِاعظم نے چند روز قبل پورے ملک میں کورونا ویکسینیشن مہم کا افتتاح کردیا تھا البتہ تمام صوبوں میں اس مہم کا آغاز اب ہوا ہے۔

اس انسدادی مہم کے مطابق ملک بھر کے تمام صوبوں میں کورونا ویکسین سب سے پہلے فرنٹ لائن ورکرز کو مہیا کی جائیں گی ۔ فرنٹ لائن ورکرز سے مراد وہ تمام افراد ہیں جن کا تعلق شعبہ صحت سے ہے کیونکہ ان کا واسطہ براہِ راست کورونا کے مریضوں سے پڑتا ہے انھیں ہی کورونا سے متاثر ہونے کا خطرہ سب سے زیادہ ہے اور اسی لیے وہی اس ویکسین کے سب سے زیادہ حقدار ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ عوام میں کورونا ویکسینز کے لئے بہت سے تخفظات پائے جاتے ہیں ۔ ہر بار نئی چیز کی طرح اس ویکسین کےحوالے سے بھی بہت سی افواہیں اڑتی رہتی ہیں مثال کے طور پر کسی کا کہنا ہے کہ اس ویکسین کے زریعے دنیا کی آبادی کم کرنے کا منصوبہ ہے تو کوئی کہتا ہے اس کے پیچھے بل گیٹس کی انسان دشمن پالیسییاں کارفرما ہیں۔

اور سب سے خطرناک افواہ تو یہ ہے کہ اس ویکسین میں سور اور دیگر حرام جانوروں کی چربی شامل کی گئی ہے جسے لگانے سے مسلمان اپنا ایمان کھو دیں گے۔

البتہ ان تمام افواہوں کا حقیقت سے کوئی لینا دینا نہیں۔ کورونا کی ویکسین دنیا بھر کے ماہرین کی انتہائی نگہداشت میں بنائی گئی ویکسین ہے جسے متعدد بار مختلف جانوروں اور انسانوں پر ٹیسٹ کیا جاچکا ہے۔ اور توجہ طلب بات تو یہ کہ اب تو یہ ویکسینز دنیا بھر میں بہت سے ممالک میں لگائی جا چکی ہیں اس لئے عوام کو مشورہ کہ آپ بے فکر ہو کر کورونا ویکسینز لگوائیں اور افواہوں پر کان نہ دھریں۔

صوبہ سندھ میں فرنٹ لائن ورکرز کو کورونا ویکسینز لگانے کا عمل کراچی کے اوجھا اسپتال میں ہوگا جس کا افتتاح سندھ کے وزیرِ اعلی سید مراد علی شاہ کریں گے۔ اسی طرح صوبہ بلوچستان میں پانچ ہزار کورونا ویکسینز لگانے کا افتتاح وزیرِاعلی جام کمال خان کریں گے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کی یہ تمام ویکسینز فرنٹ لائن ورکرز کو حکومت کی جانب سے مفت لگائی جارہی ہیں اوروزیرِ اعظم نے اس عمل میں شفافیت کی یقین دہانی کروائی ہے۔

امید ہے عوام ویکسین کے حوالے سے حکومت کے ساتھ تعاون کریں گے جس سے وقت کے ساتھ ساتھ اس موذی وائرس پر قابو پانا ممکن ہوسکے گا۔

ہمسایہ ملک چین کی طرف سے بطورِ تحفہ بھیجی جانے والی پانچ لاکھ ویکسین کٹس کے بعد کل وزیرِاعظم نے چند روز قبل پورے ملک میں کورونا ویکسینیشن مہم کا افتتاح کردیا تھا البتہ تمام صوبوں میں اس مہم کا آغاز اب ہوا ہے۔

اس انسدادی مہم کے مطابق ملک بھر کے تمام صوبوں میں کورونا ویکسین سب سے پہلے فرنٹ لائن ورکرز کو مہیا کی جائیں گی ۔ فرنٹ لائن ورکرز سے مراد وہ تمام افراد ہیں جن کا تعلق شعبہ صحت سے ہے کیونکہ ان کا واسطہ براہِ راست کورونا کے مریضوں سے پڑتا ہے انھیں ہی کورونا سے متاثر ہونے کا خطرہ سب سے زیادہ ہے اور اسی لیے وہی اس ویکسین کے سب سے زیادہ حقدار ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ عوام میں کورونا ویکسینز کے لئے بہت سے تخفظات پائے جاتے ہیں ۔ ہر بار نئی چیز کی طرح اس ویکسین کےحوالے سے بھی بہت سی افواہیں اڑتی رہتی ہیں مثال کے طور پر کسی کا کہنا ہے کہ اس ویکسین کے زریعے دنیا کی آبادی کم کرنے کا منصوبہ ہے تو کوئی کہتا ہے اس کے پیچھے بل گیٹس کی انسان دشمن پالیسییاں کارفرما ہیں۔

اور سب سے خطرناک افواہ تو یہ ہے کہ اس ویکسین میں سور اور دیگر حرام جانوروں کی چربی شامل کی گئی ہے جسے لگانے سے مسلمان اپنا ایمان کھو دیں گے۔

البتہ ان تمام افواہوں کا حقیقت سے کوئی لینا دینا نہیں۔ کورونا کی ویکسین دنیا بھر کے ماہرین کی انتہائی نگہداشت میں بنائی گئی ویکسین ہے جسے متعدد بار مختلف جانوروں اور انسانوں پر ٹیسٹ کیا جاچکا ہے۔ اور توجہ طلب بات تو یہ کہ اب تو یہ ویکسینز دنیا بھر میں بہت سے ممالک میں لگائی جا چکی ہیں اس لئے عوام کو مشورہ کہ آپ بے فکر ہو کر کورونا ویکسینز لگوائیں اور افواہوں پر کان نہ دھریں۔

صوبہ سندھ میں فرنٹ لائن ورکرز کو کورونا ویکسینز لگانے کا عمل کراچی کے اوجھا اسپتال میں ہوگا جس کا افتتاح سندھ کے وزیرِ اعلی سید مراد علی شاہ کریں گے۔ اسی طرح صوبہ بلوچستان میں پانچ ہزار کورونا ویکسینز لگانے کا افتتاح وزیرِاعلی جام کمال خان کریں گے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کی یہ تمام ویکسینز فرنٹ لائن ورکرز کو حکومت کی جانب سے مفت لگائی جارہی ہیں اوروزیرِ اعظم نے اس عمل میں شفافیت کی یقین دہانی کروائی ہے۔

امید ہے عوام ویکسین کے حوالے سے حکومت کے ساتھ تعاون کریں گے جس سے وقت کے ساتھ ساتھ اس موذی وائرس پر قابو پانا ممکن ہوسکے گا۔

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,046FansLike
2,986FollowersFollow
18,400SubscribersSubscribe

Latest Articles